حیوانیت:شوہرنے بیوی کے 7ٹکڑے کرکے پھینکی لاش ،ملزم دوبھائیوں سمیت گرفتار

juhi-murder
جنوبی دہلی کے سریتاوہارعلاقے میں ایک دل دہلادینے والا واقعہ سامنے آیاہے۔ دراصل ،دہلی کے سریتاوہارعلاقے میں گھریلو جھگڑے میں ایک شخص نے اپنی بیوی کا قتل کرکے اس کے 7ٹکرے کردےئے اوراس کی لاش کوایک باکس(کارٹن) میں پیک کرکے پھینک دیا۔خاتون کے شوہرقتل کیاتھا۔گذشتہ 21کوسریتاوہارکے خالی پلاٹ میں ایک باکس میں بندملی لاش کا معمہ پولس نے حل کرلیا۔ساتھ ہی ملزموں کوبھی گرفتارکرلیاہے۔پولس اسی باکس سے ملے سراغ سے ملزم تک پہنچ گئی۔پولس نے خاتون کے شوہراوراس کے دوبھائیوں کوگرفتارکرلیاہے۔
دہلی پولس کا دعویٰ ہے کہ ساجدعلی انصاری نے اپنی بیوی جوہی کاگلاریت کرقتل کردیا اوراس کی لاش کو7ٹکرے کرکے اپنے بھائیوں محمداشتیاق اورمحمدعصمت علی کی مددسے اسے سریتاوہارکے ایک خالی پلاٹ میں پھینک دیا۔ پولس کے مطابق، قاتل کاسراغ گتے کے اس باکس سے ملاجس میں لاش کوبندکرکے پھینکاگیاتھا۔
جنوبی مشرقی دہلی کے ڈی سی پی چنمے بسوال نے بتایاکہ لاش جس میں باکس میں رکھی ہوئی تھی اس کے بارے میں ہم نے پتالگاناشروع کیا۔پولس نے کئی ٹیم بناکراس جانچ کوآگے بڑھایا۔پولس کے مطابق، 21جون کوجب لاش ملی،تب اس کی پہچان کرپانامشکل تھا، لیکن گتے کے باکس میں بگفورٹ موورس پیکرس لکھاہواتھا۔ جانچ میں پتہ چلاکہ بگفورٹ موورس پیکرس کمپنی گڑگاؤں کی ہے۔کمپنی کے لوگوں نے بتایاکہ اس باکس میں یواے ای سے سامان آیاتھا۔یہ سامان جاویداخترنے منگوایاتھا۔ پولس نے جب جاویدسے پوچھ تاچھ کی تواس نے بتایاکہ اس نے خالی باکس اپنے دہلی کے شاہین باغ کے ایک فلیٹ میں رکھے تھے، جہاں ساجدکرائے پررہتاتھا۔لیکن جب پولس فلیٹ پرپہنچی تواس میں تالابندملا۔بعدمیں پولس نے تینوں ملزموں کوجامعہ نگرعلاقے سے ہی پکڑلیا۔
ساجدنے بتایاکہ اس نے جوہی سے 2011میں لومیرج کی تھی، لیکن بی ٹیک کرنے کے بعدبھی وہ بے روزگارتھا۔پولس کے مطابق، ساجد ایک یونیورسٹی سے انجینئرنگ کررہاتھا۔اسی دوان اس کی دوستی ایک راج بالانامی لڑکی سے ہوگئی ،جس نے بعدمیں اپنانام جوہی رکھ کرساجدسے شادی کرلی۔راج بالا یعنی جوہی کے اہل خانہ نے اس سے لاتعلقی اختیارکرلی اوریہ دونوں دہلی میں رہنے لگے۔پولس کے مطابق، جوہی اورساجددونوں بہارکے چھپراکے رہنے والے ہیں۔ جوہی بھی گریجویٹ تھی، لیکن شادی کے بعداس کے گھروالوں نے اس سے رشتہ توڑلیاتھا۔ساجدکے ڈھائی سال اورڈیڑھ سال کی دوبیٹیاں بھی ہیں۔ساجد کی دوستی ایک دوسری خاتون سے ہوگئی، جسے لیکرشوہر-بیوی میں جھگڑے ہونے لگے اورپھراس نے قتل کا پلان بنالیا۔
ساجدعلی نے پولس کوبتایاکہ اس کا اکثراپنی بیوی کے ساتھ جھگڑاہوتاتھا۔جھگڑے کی دووجہ تھی۔ایک تواس کا کسی دوسری لڑکی سے ناجائزتعلقات اوردوسری وجہ اس کی بیروزگاری۔اسی وجہ سے انہو ں نے اپنی بیوی کوموت کے گھاٹ اتاردیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *