قرض میں ڈوبے کسان نے ٹرین کے آگے کود کردی اپنی جان

Kisan
ملک کے قرض دار میں کسانوں کے ذریعہ خودکشی کا سلسلہ جاری ہے، بینک و ساہوکاروں کے قرض میں ڈوبے گاؤں ننہیڑا آسا کے باشندہ 38 سالہ کسان نے ٹرین کے سامنے کود کر اپنی زندگی ختم کر لی،اطلاع پر پہنچی پولیس نے لاش کو قبضہ میں لیتے ہوئے پوسٹ مارٹم کے لئے روانہ کردیا، کسان کی خودکشی سے جہاں اہل خانہ میں کہرام مچاہواہے وہیں انتظامیہ میں کھلبلی مچ گئی۔ کوتوالی علاقے کے گاؤں ننہیڑا آسا کے باشندہ کسان ویدپال نے قرض میں ڈوبے ہونے کی وجہ سے انتہائی مہلک قدم اٹھاتے ہوئے آج ٹرین کے سامنے چھلانگ لگا دی، وید پال گزشتہ کئی دنوں سے گناّ کٹائی کے لئے مزدور نہ ملنے سے پریشان تھا،اس کا آٹھ بیگھے زائدہ گناّ کھیت میں کھڑا ہواتھا،بتایا جاتا ہے کہ متوفی کسان پرکو آپریٹو بینک، کریڈٹ کارڈ سمیت ساہوکاروں سے لیا ہوا لاکھوں روپے کا قرض تھا۔اہل خانہ کے مطابق ویدپال منگل گناّ کٹائی کے لئے لیبر ڈھوڈنے کیلئے تلہیڑی گیاتھا لیکن لاکھ کوششوں کے باوجود لیبر کا انتظام نہیں ہو سکا جس کی وجہ سے وہ بے حد ڈپریشن میں آ گیا اور اس نے تلہیڑی بزرگ ریلوے اسٹیشن کے قریب ہی ٹرین کے سامنے کود کر خودکشی کرلی،واقعہ کی اطلاع پر موقع پر پہنچے خاندان والوں نے لاش کی شناخت کی، جس کے بعد جی آر پی پولیس نے لاش کو قبضے میں لیتے ہوئے پوسٹ مارٹم کے لئے ضلع اسپتال بھیج دیا۔ادھر ایس ڈی ایم رام ولاس یادو کا کہنا ہے کہ پہلی نظر میں معاملہ خودکشی کا لگتا ہے لیکن موت کی کیاوجہ ہے یہ ابھی واضح نہیں ہوسکا، پورے واقعے کی تحقیقات جاری ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *