سپریم کورٹ میں اداکارہ سری دیوی کی موت کی عرضی خارج

sridevi
ملک کی سب سے بڑی عدالت سپریم کورٹ نے آج بالی ووڈ کی اداکارہ سری دیوی کی موت کی آزادانہ جانچ کی مانگ کرنے والی دائر عرضی کوخارج کردیاہے۔کورٹ نے کہاہے کہ اب سری دیوی کی موت کی پھرسے جانچ نہیں ہوگی ،کیونکہ ان کے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں موت کی وجوہات کے بارے میں صاف لکھاہواہے۔سری دیوی کی دبئی میں ہوئی موت کولیکر فلم ساز سنیل سنگھ نے عرضی دائرکی تھی۔چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین ججوں کی بینچ نے فلم ڈائریکٹر سنیل سنگھ کی طرف سے دائراس درخواست کو خارج کردیا۔ سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ میں، چیف جسٹس دیپک مشرا کے علاوہ، جج ایم کھانولکر اور جج ڈی وائی چندرچوڑ شامل تھے۔

 

یہ بھی پڑھیں  لیجنڈ اداکارہ سری دیوی کی یادیں میوزیم کی زینت بنیں گی

 

بہرکیف سپریم کورٹ نے سنیل سنگھ کی درخواستوں میں کوئی ’میرٹ‘ نہ ہونے کی وجہ سے اس کو مسترد کر دیا۔ سپریم کورٹ نے چند دن قبل سری ویوی کی موت کی تفصیلی تحقیقات سے متعلق دو ایسی درخواستیں مسترد کردی تھیں۔دائرعرضی میں کہاگیاتھا کہ جن حالتوں میں سری دیوی کی موت ہوئی ، اس کی جانچ ہونی چاہئے۔

 

یہ بھی پڑھیں   لالویادو ملی 6 ہفتے کی عبوری ضمانت،تیجسوی کوبھی عدالت سے راحت

 

عیاں رہے کہ سپریم کورٹ سے پہلے دہلی ہائی کورٹ سے بھی اس عرضی کوخارج کیاجاچکاہے۔ دراصل ، فلم سازسنیل سنگھ نے دعویٰ کیاتھا کہ ،وہ دبئی میں تھے جب سری دیوی کی موت ہوئی تھی۔وہاں ہوٹل کے ملازمین اوراسٹاف کے لوگوں نے جوانہیں بتایاوہ میڈیا کودےئے گئے خاندان کے بیانوں اوردوسرے لوگوں کوبتائے گئے واقعہ کے بارے میں کافی الگ ہے۔بہرحال خبروں کے مطابق ، آج سپریم کورٹ نے پھرسے دائرعرضی کوخارج کردیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *