کرناٹک:بی ایس یدیورپا نے وزیراعلیٰ کے عہدے کا حلف لیا

bs-yeddyurappa
بی ایس یدیو رپا نے آج کرناٹک کے25 ویں وزیر اعلی کے طور پرعہدے کا حلف لیا۔راج بھون میں منعقد تقریب میں گورنر وجوبھائی والا نے انہیں حلف دلایا۔اسمبلی میں اکثرہت ثابت کرنے کیلئے انہوں نے 7 دن کا وقت مانگا تھا ،لیکن حیران کی بات یہ ہے کہ گورنر نے یدیو رپا کو ‘فلور ٹیسٹ ‘یعنی اکثریت ثابت کرنے کیلئے 15 دن کا وقت دیا ہے۔بہرحال یہ تیسری بارہے جب یدیورپاکوکرناٹک کے وزیر اعلی کی کرسی ملی ہے۔ان کے استقبال کیلئے راج بھون کے باہرزبردست تیاریاں کی گئی۔جگہ جگہ ڈھول -نگاڑے بج رہے تھے۔آج صرف یدیورپا نے ہی حلف لیاہے۔یدیو رپا کے ساتھ کسی دیگر لیڈر نے وزیر عہدے کی فی الحال حلف نہیں لیا ہے۔
خیال رہے کہ کرناٹک انتخابات میں کسی بھی پارٹی کو مکمل اکثریت نہیں ملی۔اس وجہ سے گورنر وجوبھائی والا نے چناؤ میں سب سے زیادہ سیٹیں حاصل کرنے والی بی جے پی پارٹی کو حکومت بنانے کی دعوت دے دی۔گورنر اس فیصلے کے بعد سیاسی گلیاروں میں اتھل پتھل مچ گئی ہے۔کیونکہ پہلے سے ہی کانگریس۔جے ڈی ایس مل کر حکومت بنانے کادعوی پیش کر چکی تھی۔
جیسا کہ معاملہ بیحد سنجیدہ تھا اس لئے بات سپریم کورٹ پہنچ گئی۔سپریم کورٹ میں اس معاملے کی سماعت رات کے 1:45 بجے شروع ہوئی۔اس معاملے کی سماعت سپریم کورٹ کے تین ججوں کی بینچ نے کی۔اس بینچ میں جسٹس اشوک بھوشن،جسٹس سیکری اور جسٹس بوبڈے شامل تھے۔معاملے میں مرکزی حکومت کی جانب سے ایڈیشنل سالسیٹری جنرل تشار مہتا ،بی جے پی کی جانب سے سابق اٹرنی جنرل مکل روہتگی اور کانگریس کی جانب سے ابھیشیک منو سنگھوی کورٹ میں پیش ہوئے۔
بہر حال معاملے کی سماعت کے بعد سپریم کورٹ نے حلف لینے پر روک لگانے سے انکار کر دیا ہے۔طے پروگرام کے مطابق،جمعرات کی صبح یدیو رپا نے سی یام عہدے کا حلف لیا۔اس معاملے کی اگلی سماعت جمعہ کی صبح 10:30 بجے ہوگی۔کورٹ نے اگلی سماعت میں دونوں پارٹیوں کو ارکان اسمبلی کی فہرست لانے کو کہا ہے۔
آزاد ہندستان کی تاریخ میں یہ دوسرا موقع ہے جب سپریم کورٹ رات کو کھلا اس کے پہلے سال 2015 میں ممبئی دھماکہ کیس 1993 کے ملزم یعقوب میمن کو پھانسی کیلئے سپریم کورٹ کو رات 3 بجے کھولا گیا تھا۔اس دوران 90 منٹ تک سنوائی چلی تھی۔جس کے بعد سپریم کورٹ نے یعقوب کی پھانسی کی اپیل منظور کر دی تھی۔اسے بہت ضبح 7 بجے کے قریب پہلے ناگپور سینٹرل جیل میں پھانسی کی سزا دی گئی تھی۔
ادھر گورنر وجوبھائی والا کے اس فیصلے کے خلاف کانگریس۔جے ڈی ایس خلاف راج بھون کے باہر مخالف مظاہرے کی تیاری میں تھی جس کے مد نظر شہر میں سکیورٹی نظام برقرار رکھنے کیلئے کثیرتعدادپولیس اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *