قرآن کریم کی تعلیم کو عام کرنا وقت کی اہم ضرورت:علماء کرام

jalsa
مظفرنگر کے گاؤں شیر نگر میں واقع دینی درسگاہ مدرسہ اسلامیہ فخر الاسلام اور شعبہ للبنات میں نوفارغ شدہ حفاظ کرام کی دستار بندی اور 24عا لماؤں کی ختم بخاری شریف کی مناسبت سے منعقد تقریب کو خطاب کرتے ہوئے دارالعلوم دیوبند کے مبلغ مولانامحمد یامین قاسمی نے امام بخاری کے احوال اور امام کی حدیث کی خدمات کے حوالہ سے کہا کہ کسی بھی حدیث کو لکھنے سے پہلے امام بخاری غسل کرتے اور 2رکعت نفل پڑھتے،اس طرح بخاری شریف ڈیڑھ دہائی سے زیادہ عرصہ میں مکمل ہوئی ہے۔انھوں نے کہا امام بخاری نے اپنے دور میں دستیاب ذرائع سے ملی احادیث کی چھان بین میں آخری حدوں تک کوشش کی ہے،امام کی یہی کوشش ہوتی کہ جو کچھ بخاری میں لکھا جائے ،وہ سو فی صد صحیح ہو۔ اسی لیے آج پوری امت مسلمہ قرآن کریم کے بعد بخاری کا رتبہ پر متفق ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں   بھیم آرمی کارکن سچن والیہ کاگولی مارکر قتل

 

مولانا قاری محمد شوکت ویٹ نے کہا کہ تعلیم نسواں ایک اہم مسئلہ ہے ،جس میں مسلم سماج ہنوز پوری طرح بیدار نہیں ہوا ہے ۔انھوں نے کہا قوم نے کروٹ تو لی ہے،لیکن ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ قرآن کریم کی تعلیم کو عام کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ،قرآن کریم تمام انسانوں کے لیے سراپا ہدایت ہے ۔ مظاہر العلوم جدید کے استاد حدیث مفتی محمد جابر نے بخاری شریف کا آخری درس دیتے ہوئے متعلقہ حدیث کلمتان حبیبتان الخ پر کی سند ومَتَن پر اور راویوں پر بحث کرتے ہوئے،حدیث شریف کے اندر استعمال کیے الفاظ عدل وقسط،میزان اور سبحان وحمد کے بارے میں لغوی بحث کی اور بتایا کہ روز محشر اعمال تولے جائیں گے۔مفتی موصوف نے حدیث کی نحوی اور صرفی بحثوں کے حوالہ سے بھی پُر مغم بحث کی ۔ تقریب کا آغاز قاری محمد جابر کی تلاوت کلام اللہ اور محمد مدثر کی نعت نبی سے ہوا۔

 

یہ بھی پڑھیں   کشمیرکی ’آزادی ‘مانگنے والے نوجوانوں کوبپن راوت کی وارننگ

 

مولانا جابر فرحت تاؤلوی نے کہا کہ قرآن کریم مکمل ضابطہ حیات ہے ، انھوں نے کہا کہ روز محشر حافظ قرآن سے کہا جائے گا کہ قرآن کریم پڑھتا جا اور جنت کے درجوں پر چڑھتا جا ،حافظ قرآن کے والدین کو ایسے چمکدار چوڑے پہنائیں جائیں گے جن کی روشنی آفتاب سے کہیں سے کہیں زیادہ ہوگی اور حافظ قرآن کی 10؍ ایسے افراد کے حق میں سفارش قبول ہوگی ،جن پر جہنم واجب ہوچکی ہوگی ۔ نظامت کے فرائض مولانا جابر تاؤ لوی نے انجام دیے۔
بعد ازاں نوفارغ شدہ حافظ محمد سہیل، محمد انس، محمد جاوید، محمد حارث،محمد بلال سمیت 8حفاظ کرام کی دستار بندی ہوئی جب کہ رابعہ خاتون،گلستاں،اسماء، پروین . گل افشاں،بشری خاتون،صاحبہ خاتون،فردوس،نرگس،نازیہ فرحینوغیرہ کو حدیث شریف کی سند سے نوازاگیا ۔آخر میں ادارہ کے مہتمم اعلی مولانا ڈاکٹر جمال الدین قاسمی نے حاضرین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے سالانہ تعلیمی اور مالی رپورٹ پیش کی،جس پر علماء کی جماعت نے اطمنان کا اظہار کیا ۔شرکاء میں جمعیتہ علماء کے ضلع صدر مفتی بن یامین، مولانا ارشد،قاری مدثر،مولانا منشاد،مولانا دین محمد،قاری مرغوب،مولانا اسلم،مولانا عبد العلیم،مولانا اسلام الدین،مولانا عبد الرحمان،مولانا ارشاد،مفتی عبد الجبار،مولانا منظور،پردھان شالو وغیرہ کے نام قابل ذکر ہیں ۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *