’علی گڑھ ملیالم‘ کتاب پر مذاکرہ کا انعقاد

Prof.-Rajendrababu
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) میں ’علی گڑھ ملیالم‘ کتاب پر ایک مذاکرہ کا انعقاد کیا گیا۔ ملیالم زبان میں یہ کتاب چند روز قبل کیرالہ سے شائع ہوئی ہے۔ مذاکرہ کا افتتاح کرتے ہوئے مدراس یونیورسٹی کے ملیالم شعبہ کے سابق صدر اور ملیالم فلم صنعت کے مشہور اسکرپٹ رائٹر پروفیسر سی جی راجیندر بابو نے کہا’’اے ایم یو جیسی ملک کی ممتاز یونیورسٹی میں ملیالم کی تعلیم ہوتی ہے، یہ ہمارے لئے باعث فخر و مسرت ہے، اترپردیش میں صرف اسی یونیورسٹی میں ملیالم زبان زندہ ہے۔ پانچ دہائیوں سے زیادہ عرصہ کی اس تاریخ کو بیان کرنے کی کوشش بہت قابل قدر ہے‘‘۔
پروفیسر راجیندر بابو نے کہاکہ ملیالم زبان و ادب کی درس و تدریس کے ساتھ یونیورسٹی کے بارے میں بھی اس کتاب سے قیمتی معلومات حاصل ہوئی ہیں اور اس سے دیگر شعبوں کو بھی اس طرح کی کتاب لکھنے کی ترغیب ملتی ہے۔ اس موقع پر شعبۂ لسانیات کے صدر پروفیسر امتیاز حسنین نے پروفیسر راجیندر بابو کو یادگاری نشان پیش کیااور ملیالم زبان کے بارے میں اپنے خیالات پیش کئے۔ پروفیسر راجیندر بابو نے کتاب کے مرتّب اور اے ایم یو میں گزشتہ تیس سال سے ملیالم زبان و ادب کے استاد پروفیسر ٹی این ستیشن کی عزت افزائی کی۔
پروفیسر ستیشن نے اے ایم یو میں 1961ء سے لے کر اب تک کی ملیالم درس و تدریس کی تاریخ پر روشنی ڈالی ۔ انھوں نے پدم شری ڈاکٹر وی ارجُنن اور ڈاکٹر کے اے کوشی جیسے اساتذہ کا ذکر کیا۔ مذاکرہ میں پروفیسر پی ایم نوشاد علی، ڈاکٹر منیر، ڈاکٹر اے اسیر، رنجیت اور رفسل بابو نے حصہ لیا۔ صفر الحق نے نظامت کے فرائض انجام دئے۔

 

یہ بھی پڑھیں   اے ایم یو : 18طلباو طالبات، جے آر ایف /نیٹ امتحان میں کامیاب
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *