گوگل انڈیانے رام موہن رائے کو ڈوڈل بناکر یاد کیا

raja-ram-mohan-roy
انٹرنیٹ سرچ انجن گوگل انڈیانے آج ملک کے عظیم سماجی مصلح راجا رام موہن رائے کی سالگرہ کے موقع پر ان کاڈوڈل بناکر انہیں خراج عقیدت پیش کیا۔ رام موہن رائے بنگالی اور سنسکرت کے علاوہ عربی، فارسی اور انگریزی کے بھی بڑے فاضل تھے۔انہیں کئی زبانوں کا علم تھاجس کی وجہ سے وہ مختلف حصوں کے لوگوں کے ساتھ باآسانی بات چیت کر لیتے تھے۔ اسلام اور مسیحی مذہب کی تعلیمات نے ان پر بڑا اثر کیا اور انہوں نے ہندو سماج کے سدھار کا کام شروع کیا۔ 1830ء میں برہمو سماج کی بنیاد ڈالی۔ مورتی پوجا کی مخالفت کی اور خدا کی وحدانیت کی تعلیم دی۔ ستی کی خوفناک رسم ختم کرنے میں بھی بڑا کام کیا۔ اس کے علاوہ عورتوں کے حقوق اور اپنی قوم کی تعلیم و تربیت پر زور دیا۔ انہوں نے کئی مذہبی کتابوں کا بھی مطالعہ کیا اور برہم سماج کی تشکیل کی۔
رام موہن را نے معاشرے کی بھلائی کے لئے کئی اچھے کام کئے جس کے لئے لوگ اب بھی انہیں یاد کرتے ہیں۔انہوں نے بچوں کی شادی سے لے کر ستی کی رسم جیسی برائیوں کو سماج سے ختم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ اس وقت ان برائیوں کو دور کرنا تو دور کی بات تھی ان کے خلاف بولنا بھی گناہ سمجھا جاتا تھا لیکن سماجی مصلح اور صحافی مسٹر رام موہن رائے نے ان تمام برائیوں کی مخالفت کی اور انہیں ختم کیا۔ لہذا انہیں ’جدید ہندستان کاتخلیق کار‘ بھی کہا جاتا ہے۔
بانی برہمو سماج رام موہن رائے کی پیدائش بنگال کے ہگلی ضلع کے رادھانگر میں ہوا تھا۔ ان کے والد کا نام رام کانت ویشنو تھا اور ان کی ماں کا نام ترینی دیوی شیو تھا۔ انہوں نے اپنی ابتدائی تعلیم بنگال کے ہی ایک گاؤں میں حاصل کی۔ 1831ء میں انگلستان گئے اور وہاں برسٹل کے مقام پر وفات پائی۔
بہرحال رام موہن رائے کی 246 ویں سالگرہ کے موقع پر گوگل نے ان کے لئے ایک خاص ڈوڈل بنا کر انہیں یاد کیا ہے جس میں انہیں معاشرے کی قیادت کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *