بودھ گیا بم دھماکے معاملے میں 5افراد قصور وار قرار ،سزاپرسماعت 31مئی کو

bodhgaya-blast-file-pic
بہارکی ایک عدالت نے بودھ گیاکے مہابودھی مندرکے پاس پانچ سال پہلے ہوئے سلسلہ واربم دھماکے معاملے میں جمعہ یعنی 25مئی کوسبھی پانچوں ملزموں کوقصوروارقراردیا۔اس معاملے میں 31مئی کوقصورواروں کوسزاسنائی جائے گی۔پٹنہ کی قومی جانچ ایجنسی ( این آئی اے) کی خصوصی جج منوج کمار سنہا کی عدالت نے دونوں فریقین کی دلیلیں سننے کے بعدپانچوں ملزموں کو کو مجرم قرار دیا ۔عدالت نے عمرصدیقی،اظہرالدین قریشی، حیدرعلی، مجیب اللہ انصاری اورامتیازانصاری کوبودھ گیابم دھماکے معاملے میں قصوروارقراردیتے ہوئے کہاکہ ان کی سزکے معاملے میں سنوائی 31مئی کوہوگی۔این آئی اے کے خصوصی جج منوج کمار سنہا نے معاملے کی سماعت کے بعد ملزم جھارکھنڈ، رانچی کے حیدرعلی، امتیاز انصاری، مجیب ا للہ اور چھتیس گڑھ ، رائے گڑھ کے عمر صدیقی اور اظہر الدین قریشی کو تعزیرات ہند،کی مختلف دفعات سازش کرنے ، آتش گیر مادہ ایکٹ، دیگر ایکٹ اور دہشت گردانہ سرگرمیوں کی حوصلہ افزائی کرنے کے لئے فنڈز کا بندوبست کرنے کا مجرم قرار دیا ہے۔

 

پڑھیں   دہلی سمیت کئی ریاستیں شدیدگرمی کی زدمیں 

 

الزام کے مطابق، 7 جولائی 2013 کو بہار کے گیا ضلع میں واقع بدھ مت کے مقدس مقام بودھ گیا کے مہابودھی مندر کمپلیکس میں سلسلہ وار بم دھماکے ہوئے تھے۔ ان بم دھماکوں میں متعدد افراد زخمی ہوگئے تھے۔ پولس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے مندر کے احاطے میں کئی بموں کو ناکارہ کیا تھا۔بعد میں، کیس کی تحقیقات این آئی اے کو دی گئی۔ این آئی اے نے تحقیقات کے بعد چھ افراد کے خلاف چارج شیٹ داخل کی تھی، جن میں سے ایک ملزم نابالغ تھا جس کی سماعت جیووینائل جسٹس بورڈ (جے جی بی) نے کرتے ہوئے کچھ دن پہلے ہی اسے مجرم قرار دیا تھا۔بودھ گیا بلاس معاملے کے ملزم چھ دہشت گردوں میں سے ایک توفیق کے نا بالغ ہونے کے سبب اسے ریمانڈ ہوم میں رکھا گیا ہے ۔ توفیق کو جوینائل کورٹ سے پہلے ہی تین سال کی سزا سنائی جا چکی ہے۔ باقی دیگر پانچ ملزموں کی سماعت پٹنہ سول کورٹ واقع خصوصی عدالت میں ہو رہی تھی، جنہیں آج مجرم قرار دیا گیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *