آرک بشپ کے خط پربی جے پی برہم ،عیسائی رہنماہوئے متحد

archbishop-anil-Couto
آرک بشپ ( کیتھولک) انل کاؤنٹو کی طرف سے پادریوں کو لکھے خط پر بی جے پی اور راشٹریہ سوئم سویک سنگھ( آر ایس ایس) نے پلٹ وار کیا ہے۔ مرکزی وزیرداخلہ راجنا تھ سنگھ نے کہا بھارت میں مذہب، فرقہ جیسی باتوں کی بنیاد پر تفریق کی اجازت نہیں ہے۔ وہیں آرایس ایس کے راکیش سنہا نے کہا کہ یہ سب ویٹکن کے اشارے پر ہورہا ہے۔
بی جے پی لیڈر اور مرکزی وزیر مملکت گیری راج سنگھ نے کہا کہ ہر عمل کا ردعمل ہوتا ہے۔ گیری راج سنگھ نے کہا کہ میں ایسا کوئی قدم نہیں اٹھاؤں گا جس سے فرقہ واریت کو ٹھیس پہنچے۔ لیکن اگر چرچ لوگوں سے مودی حکومت نہ آنے کے لئے دعا کرنے کو کہتا ہے تو ملک کو سوچنا پڑے گا کہ دوسرے مذاہب کے لوگ کیرتن پوجا کریں گے۔
مرکزی اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی کا کہنا ہے کہ وزیراعظم مذہب اور ذات سے پرے بغیر تفریق سب کی ترقی کے لئے کام کررہے ہیں۔ صرف ترقی یافتہ سوچ رکھنے کے لئے کہہ سکتے ہیں۔ شائنا این سی نے آرک بشپ کی اپیل پر کہا کہ آپ کسی کو صحیح امیدوار یا پارٹی منتخب کرنے کے لئے کہہ سکتے ہیں، لیکن کسی خاص پارٹی کو ہی ووٹ ڈالنے کے لئے کہنا غلط ہے۔ ایسا کرتے ہوئے خود کو سیکولر بتانا بدقسمتی ہے۔ ذاتوں اور فرقہ کو اکسانا اور ایسی کوشش کرنا غلط ہے۔
دوسری جانب دہلی کے آرک بشپ انل جوزف تھامس کاٹوکے ذریعہ عیسائیوں کے لئے لکھے گئے کھلے خط کو لے کر حکمراں بی جے پی کے لیڈران کی طرف سے کی جارہی شدید مخالفت کے بعد دہلی کے عیسائی رہنماؤں نے اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے آرک بشپ کے شانہ بشانہ کھڑا ہونے کا اعلان کیا ہے۔ عیسائی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ آرک بشپ نے دہلی کے عیسائیوں کو ایک مذہبی رہنما کی حیثیت سے ملک کے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے ان سے خاص عبادت کرنے اور روزہ رکھنے کی اپیل کی ہے۔ اس میں کسی طرح کی کوئی بھی سیاست نہیں ہے۔ چرچیز آف نارتھ انڈیا دہلی ڈائسیس کے سینئر پادری فادر سلیمن جارج کا کہنا ہے کہ آرک بشپ نے ملک کے موجودہ حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے عیسائی طبقہ کے لوگوں سے خاص عبادت کرنے اور روزہ رکھنے کی اپیل کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک کے جوموجودہ حالات ہیں وہ کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں۔ مرکز کی حکمراں جماعت کے اقتدار میں آنے کے بعد سے دلتوں اور اقلیتی طبقوں کے لوگوں کے ساتھ ظلم وزیادتی بڑھ گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جگہ جگہ انہیں بغیر کسی وجہ کے مارا پیٹا جارہا ہے۔ چرچوں اور مسجدوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ آرک بشپ کے خط کو سیاست سے جوڑنا ٹھیک نہیں ہے۔
سلوم ارادھنالیہ کے پاسٹر بیجامن جیمس کا کہنا ہے کہ آرک بشپ کے عیسائیو ں کے خاص عبادت کرنے اور جمعہ کے دن روزہ رکھنے کی اپیل ایک عام بات ہے۔انہوں نے کہا کہ اس خط میں کہیں پر بھی موجودہ حکومت کے خلاف کوئی بات نہیں کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں جو کچھ بھی رونما ہورہا ہے اس کو دیکھتے ہوئے آرک بشپ نے عام عیسائیوں کے لئے خط لکھا ہے۔2019کے عام انتخابات کے لئے اگر بشپ نے عیسائیوں سے خاص عبادت کرنے کی اپیل کی ہے تو اس میں حکمراں جماعت سے جڑے لوگوں کو کیا اعتراض ہے۔ترکمان گیٹ میں واقع ہولی ٹرینٹی چرچ کے پادری جیکب جیمس نے کہا ہے کہ آرک بشپ کے خط میں ایسا کچھ بھی نہیں ہے جس کی بی جے پی کے لوگ مخالفت کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عبادت کرنے کی اپیل ہمیشہ سے مذہبی رہنما کرتے رہے ہیں۔ اس میں بی جے پی کے لوگوں کو اتنا آگ بگولہ ہونے کی کیا ضرورت ہے۔
آل انڈیامائنارٹی فنڈامنٹل رائٹ اینڈ پروٹیکشن کمیٹی کے جنرل سکریٹری سیمسن فیڈرک جوزف نے کہا ہے کہ مرکز کی حکمراں جماعت کو آر ک بشپ کے خط پر اتنا اعتراض کیوں ہورہا ہے ہمیں یہ سمجھ میں نہیں آرہا ہے۔ ہم نے خط پڑھا ہے اس میں ایسی کوئی بات نہیں کی گئی ہے جس پر اس کی مخالفت کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزراء اس خط کی مخالفت کررہے ہیں جبکہ اس خط میں 2019میں ملک میں ایک اچھی ،صاف ستھری اور امن پسند حکومت بنے اس کے لئے آرک بشپ نے عیسائیوں سے چرچوں میں خاص عباد ت کرنے اور روزہ رکھنے کی اپیل کی ہے۔
واضح رہے کہ دہلی کے آرک بشپ انل کاؤنٹو نے پادریوں کے لئے خط جاری کیا ہے جس میں ملک کے سیاسی حالت کو ہنگامہ خیز بتاتے ہوئے لکھا ہے کہ موجودہ حالات میں جمہوری روایتوں اور فرقہ واریت کے لئے خطرہ پیدا ہوگیا ہے۔ ملک اور سیاسی لیڈروں کے لئے دعا کرنا ہماری پاک روایت ہے۔ لوک سبھا انتخابات کو دیکھتے ہوئے یہ بے حد اہم ہے۔ 8مئی کو لکھے گئے خط میں حکم دیا گیا ہے کہ ہراتوار کو اجتماعی دعا میں اسے پڑھا جانا چاہئے۔ آرک بشپ نے اپنے خط میں لکھا ہے کہ عیسائی فرقہ کے لوگ ہر جمعہ کو ایک گھنٹے خصوصی دعا کریں اور روزہ رکھیں۔ ملک میں امن، برابری اور آزادی کے لئے یہ ضروری ہے۔ اگلے سال الیکشن ہونے ہیں، ایسے میں ہمیں دعا مہم چلائی چاہئے۔ ہمارے مذہبی رہنماؤں اور آئین کے مطابق برابری، آزادی اور بھائی چارہ کو ہمیشہ اوپر رکھنا چاہئے۔اس معاملے میں آرک بشپ کے سکریٹری نے بیان جاری کیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *