مدھیہ پردیش : پولس میں بھرتی کیلئے نیم برہنہ لڑکوں اورلڑکیوں کاایک ساتھ میڈیکل ٹسٹ

Bhind-Check-Up

مدھیہ پردیش کے دھار ضلع میںیہ شرمناک واقعہ سامنے آیا ہے جس سے انتظامیہ اور سرکار کی بے حسی کی واضح مثال سامنے آئی ہے ۔ابھی پولس بھرتی کے دوران امیدواروں کے سینے پر ذات لکھے جانے کا معاملہ ٹھنڈہ نہیں ہوا تھاکہ پھر ایک نئے متنازعہ حرکت سے مدھیہ پردیش سرکار پر تنازعہ کھڑا ہونا لازمی ہے ۔تازہ معاملے میں مدھیہ پردیش کے ہی بھنڈ ضلع میں نئی بھرتیوں کے ساتھ میڈیکل جانچ کے دوران نیم برہنہ لڑکوں کے سامنے ہی لڑکیوں کا بھی میڈیکل ٹیسٹ لیا جا رہا ہے جو انتہائی شرمناک ہے ۔
دراصل بھنڈ ضلع اسپتال میں ایک ہی کمرے میں لڑکے اور لڑکیوں کا میڈیکل چیک اپ کیا گیا ہے۔ چیک کے دوران لڑکیوں کے سامنے لڑکوں کو نیم برہنہ کروایا گیا۔ اتنا ہی نہیں لڑکیوں کے میڈیکل ٹسٹ کے دوران وہاں کوئی بھی خاتون ڈاکٹر اور نرس موجود نہیں تھیں۔بھنڈ پولس لائن میں 217 نئے خاتون اور مرد وں کی پولیس میں بھرتی ہوئی ہے، جن میں سے الگ الگ مرحلوں میں ضلع اسپتال میں میڈیکل ٹسٹ کروایا جارہا ہے۔ منگل صبح ضلع اسپتال میں 39 لڑکے لڑکیوں کے میڈیکل ٹسٹ کرائے گئے، جن میں سے تقریباً 18 لڑکیاں اور 21 لڑکے شامل تھے۔

 

bhind

 

معاملہ سامنے آنے کے بعد جب ضلع اسپتال سے منسلک افسران سے پوچھا گیا تو وہ سوالوں کا جواب دینے سے بچتے نظر آئے۔ وہیں اس معاملے میں سول سرجن نے جانچ کے احکامات دے دیئے ہیں۔ سول سرجن ڈاکٹر اجیت مشرا نے متعلقہ قصور وار لوگوں کو وارننگ لیٹر جاری کیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *