اِسکیزو فرنیا ایک دماغی بیماری ہے: ڈاکٹر ایس اے اعظمی

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج کے دماغی امراض شعبہ کے صدر پروفیسر ایس اے اعظمی نے کہاکہ اِسکیزوفرینیا ایک دماغی بیماری ہے اور ہندوستان میں یہ ایک فیصد لوگوں میں پایا جاتا ہے۔ یہ بات انھوں نے شعبہ میں منائے جانے والے عالمی یومِ اِسکیزوفرینیا کے موقع پر کہی۔ انھوں نے کہاکہ یہ بیماری عام طور پر پندرہ سے پچیس برس کی عمر کے نوجوانوں میں ہوتی ہے۔ اس میں مریض کی سوچ خراب ہونے لگتی ہے اور اس میں شک کرنے کی عادت بھی پیدا ہوجاتی ہے۔ ڈاکٹر اعظمی نے کہاکہ مریض کو کوئی آوا زنہ ہونے پر بھی آوازیں سنائی پڑتی ہیں اور اس

کرناٹک :وزیراعلیٰ کمارسوامی کا بڑااعلان


کا برتاؤ غیرمعمولی ہوجاتا ہے۔
پروفیسر اعظمی نے کہاکہ اس بیماری کی ایک وجہ دماغ میں بایو کیمیکل اجزاء کا عدم توازن ہے ۔ انھوں نے کہا کہ اس بیماری کا علاج ممکن ہے اور یہ کوئی جادو ٹونا نہیں ہوتا۔ انھوں نے کہا کہ مریض میں بیماری کی علامات ظاہر ہونے پر جھاڑ پھونک، خراب ہوا، اوپری چکر وغیرہ میں نہ پڑ کر فوراً دماغی امراض کے ڈاکٹر سے رابطہ اور مشورہ کرنا چاہئے اور مریض کے ساتھ اچھے برتاؤ کا مظاہرہ کرنا چاہئے۔ اس موقع پر شعبہ کے اساتذہ، ریزیڈنٹ ڈاکٹر وغیرہ موجود تھے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *