آل انڈیا سرسید میموریل ڈبیٹ مقابلہ منعقد

Winner-All-India-debate
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) طلبہ یونین کی جانب سے سالانہ آل انڈیا سرسید میموریل ڈبیٹ مقابلہ گزشتہ برسوں کی طرح اس برس بھی ہندی ، اردو اور انگریزی میں منعقد کیا گیا جس کا موضوع تھا ’’عالَم کاری دراصل سرمایہ دارانہ نظام کی عالمی توسیع ہے‘‘۔ڈبیٹ میں 31؍ٹیموں نے حصہ لیا جس میں ہندی کے زمرہ میں جامعہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی کی ٹیم اوّل رہی، جبکہ دہلی یونیورسٹی کے رام لال آنند کالج کی ٹیم نے دوسرا مقام حاصل کیا۔ ہندی میں سب سے ممتاز مقرر کا انعام دہلی یونیورسٹی کی طالبہ اپوروا نے جیتا۔
انگریزی زمرہ میں پنجاب یونیورسٹی، چنڈی گڑھ کی ٹیم نے بازی ماری اور مس تنو نے سب سے بہتر مقرر کا انعام حاصل کیا۔ اردو میں جامعہ ملیہ اسلامیہ کی ٹیم نے پہلا مقام حاصل کیا ، جب کہ محمد علی جوہر یونیورسٹی کی ٹیم دوسرے مقام پر رہی۔ اس مقابلہ کے اوورآل فاتح کی ٹرافی جامعہ ملیہ اسلامیہ کی ٹیم نے حاصل کی۔ اس موقع پر پروفیسر اختر الواسع بطور مہمان خصوصی موجود رہے۔ طلبہ یونین کے صدر مشکور احمد عثمانی، نائب صدر سجاد سبحان راتھر اور سکریٹری محمد فہد بھی موجود تھے۔
اس سال ڈبیٹ مقابلہ کا انعقاد اے ایم یو طلبہ یونین کے کیبنٹ ممبر زید شیروانی کی دیکھ ریکھ میں یونیورسٹی کے ڈبیٹنگ و لٹریری کلب کے سکریٹری آصف اخلاق اور ان کی ٹیم نے مشترکہ طور سے کیا۔ قابل ذکر ہے کہ اے ایم یو طلبہ یونین کی جانب سے آل انڈیا سرسید میموریل ڈبیٹ مقابلہ گزشتہ 70؍برسوں سے بھی زائد عرصہ سے منعقد کیا جارہا ہے، جس میں ملک کی ممتاز یونیورسٹیوں کی ٹیمیں شرکت کرتی ہیں۔ اس ڈبیٹ میں دستور ہند کے معمار ساز ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر بھی بطور مہمان شرکت کرچکے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *