تاج محل معاملہ : اتر پردیش سنی وقف بورڈ نہیں پیش کر سکا دستاویز

Taj-Mahal
تاج محل پرمالکانہ حق کے معاملہ میں سماعت کے دوران آج اترپردیش سنی وقف بورڈ سپریم کورٹ کے سامنے ایسا کوئی دستاویز پیش نہیں کرسکا جس سے تاج محل پر اس کی ملکیت کا حق ثابت ہو سکے۔ حالانکہ بور ڈ نے آج بھی اپنی پرانی بات کو دہراتے ہوئے کہا کہ تاج محل پر ان کا حق ہے۔ وقف بورڈ کی جانب سے سینئر وکیل سلمان خورشید نے کہا کہ تاج محل کا مالک اللہ ہے۔ اگر کوئی جائیداد ایک بار وقف کو دی جاتی ہے تو وہ اللہ کی جائیداد بن جاتی ہے۔اس کے بعد چیف جسٹس دیپک مشرا نے کہا کہ آپ عدالت کا وقت خراب کر رہے ہیں۔ سماعت کے دوران وقف بورڈ نے کہا کہ اے ایس آئی تاج محل کی دیکھ ریکھ کرتی ہے ، اس میں ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہے لیکن اس پر مالکانہ حق وقف بورڈ کا ہی ہے۔ وہاں پر نماز ادا عطا کرنے کا حق برقرار رکھا جانا چاہیے۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ اس کے لئے اے ایس آئی سے بات کریں۔ تب اے ایس آئی نے کہا کہ اس پر جواب دینے سے پہلے ہمیں حکومت سے ہدایت حاصل کرنی ہوگی۔ اس کے لئے ہمیں وقت دیا جائے ۔ اس کے بعد عدالت نے اس معاملہ کی اگلی سماعت 27مئی کو طے کی جس دن ملکیت کے حق کے معاملہ میںآخری سماعت ہو گی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *