جج لویا کی موت کی جانچ نہیں ہوگی:سپریم کورٹ

loya
مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے جج بی ایچ لویا کی موت کی ایس آئی ٹی جانچ کی مانگ پرسپریم کورٹ بڑا فیصلہ سنایاہے۔سپریم کورٹ نے کہاہے کہ جج لویا کیس کی جانچ نہیں ہوگی۔کورٹ نے جانچ کی مانگ کرنے والی عرضی کوخارکردیاہے۔سپریم کورٹ نے اس معاملے میں تلخ تیور اپنائے ہیں۔سپریم کورٹ نے جج بی ایچ لویا موت کیس کی آزادانہ جانچ کرانے سے متعلق تمام عرضیاں آج مسترد کر دیں۔ چیف جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اے ایم کھانولکر اور جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی بنچ نے عرضیاں یہ کہتے ہوئے مسترد کر دیں کہ لویا موت معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کرنے والی ان درخواستوں میں کوئی ’میرٹ‘ نہیں ہے۔
فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ کے جسٹس چندرچوڈ نے کہاکہ جوجج لویا کے ساتھ سفر کررہے تھے ان پرشک نہیں کیاجاسکتا۔ بمبئی ہائی کورٹ کے سبھی ججوں پرغلط الزام لگائے گئے۔ سپریم کورٹ نے کہاکہ معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کے مطالبہ کی آڑ میںیہ عدلیہ کی شبیہ کوبدنام کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔ عدالت نے کہا کہ کاروباری اور سیاسی جنگ مفاد عامہ کی درخواستوں کے ذریعے نہیں لڑی جا سکتی اور متعلقہ درخواستوں میں’میرٹ‘ کا فقدان نظر آتا ہے۔بہرکیف جج لویاکی موت معاملے میں جانچ والی عرضی کوسپریم کورٹ خارج کردیاہے۔عرضی دہندگان کوپھٹکارلگاتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہاکہ ایس آئی ٹی جانچ والی عرضی میں دم نہیں ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *