مکہ مسجدبم بلاسٹ:آج آئے گافیصلہ

makka-masjid
حیدرآبادکی مکہ مسجد میں ہوئے بلاسٹ پرآج فیصلہ آسکتاہے۔معاملے کے ملزم اسیمانند بھی حیدرآبادکی نامپلی کورٹ پہنچ چکے ہیں۔دھماکہ کیس میں 11 سال بعد قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کی خصوصی کورٹ اس معاملے میں فیصلہ سناسکتاہے۔ 2007 میں حیدرآباد میں جمعہ کی نماز کے دوران دھماکے میں 9لوگوں کی موت ہوگئی تھی جبکہ دیگر 58 افرادزخمی ہو گئے تھے۔ اس واقعے کے بعد پولیس نے مظاہرین کو روکنے کے لئے ہوائی فائرنگ کی تھی جس میں پانچ اور لوگ مارے گئے تھے۔ اس واقعے میں 160 چشم دید گواہوں کے بیانات درج کیے گئے تھے۔اس معاملے میں 10ملزمین تھے جن میں سے 8کے خلاف چارج شیٹ داخل کی گئی ہے، جس میں سوامی اسیمانند کا نام بھی شامل ہے۔جن 8لوگوں کے خلاف چارج شیٹ بنائی گئی تھی اس میں سے سوامی اسیمانند اوربھارت موہن لال رتنیشور عرف بھرت بھائی ضمانت پرباہرہیں اورتین لوگ جیل میں بندہیں۔
مکہ مسجدمعاملے میں سی بی آئی نے سب سے پہلے 2010میں اسیمانندکوگرفتارکیاتھا لیکن 2017میں انہیں ضمانت مل گئی تھی۔ اس میں ابھینو بھارت کے تمام ارکان شامل ہیں۔ سوامی اسیمانند سمیت دیویندر گپتا، لوکیش شرما عرف اجے تیواری، لکشمن داس مہاراج، موہن لال رتیشور اور راجیندر چوہدری کو اس معاملے میں ملزم قرار دیا گیا۔ دو ملزم رام چندرکالسانگرا اور سندیپ ڈانگے اب بھی فرار ہیں۔ تحقیقات کے دوران ہی آر ایس ایس کے سنیل جوشی کو گولی مار دی گئی تھی۔عیاں رہے کہ 18مئی 2007کودوپہرقریب ایک بجے کے آس پاس مسجدمیں دھماکہ ہوا تھا جس میں 5لوگوں کی موقع پرہی موت ہوگئی تھی اور4لوگ سنگین طورپرزخمی ہوگئے تھے۔ بعدمیں ان چاروں کی موت ہوگئی۔بعدمیں اس معاملے کوسی بی آئی کوٹرانسفرکردیاگیاتھا لیکن پھریہ معاملہ این آئی اے کے پاس چلاگیا۔

 

یہ بھی پڑھیں    دین بچاؤ-دیش بچاؤ کانفرنس نے نئی تاریخ رقم کی
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *