یوپی ضمنی انتخابات :گورکھپور-پھولپوردونوں سیٹوں پر ایس پی کا قبضہ،بی جے پی کی کراری شکست

up

اتر پردیش میں لوک سبھاکی دونوں اہم سیٹوں گورکھپوراور پھولپور کے لئے ہوئے ضمنی انتخابات میں بی جے پی کو زبردست شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ریاست کی اہم اپوزیشن جماعت سماجوی پارٹی (ایس پی) نے بی ایس پی کے ساتھ اتحاد کر دونوں نشستوں پر قبضہ کرلیاہے۔ بی جے پی کی اس شکست سے وزیر اعلیٰ آدتیہ ناتھ اور نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کی ساکھ کو دھچکا لگا ہے۔ دراصل یوگی اور کیشو کے استعفیٰ دینے کے بعد خالی ہوئی گورکھپور اور پھول پور کی نشستوں کے لئے یہ ضمنی انتخاب ہوئے ہیں۔ اترپردیش کے ضمنی انتخابات میں سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو اور بی ایس پی سپریمو مایا وتی کی جوڑی حکمراں بی جے پی پر بھارتی پڑگئی ہے۔ جہاں وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ اپنی گڑھ مانی جانے والی گورکھپور سیٹ کو بھی نہیں بچاپائے، وہیں نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ کی پھولپور سیٹ بھی بی جے پی سے چھن گئی ہے۔ دونوں سیٹوں پر سماجوادی پارٹی کے امیدواروں نے کامیابی حاصل کی ہے۔
اترپردیش کی گورکھپور سیٹ پرسماجوادی پارٹی کے امیدوار پروین نشاد اب 21 ہزار سے زئد ووٹوں سے بی جے پی امیدوار کو شکست دی۔ ادھرپھولپور میں بھی سماجوادی پارٹی کے امیدوار ناگیندر سنگھ پٹیل نے بی جے پی کے امیدوار کو 59613 ووٹوں کے بڑے فرق سے ہرادیا ہے۔یوپی کی ان دونوں نشستوں پر بی جے پی کے ساتھ ساتھ وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کا وقار داؤپر لگا ہوا تھا۔کیونکہ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ تقریبا 20 سالوں پر گورکھپور سے لگاتار کامیاب ہو تے رہے ہیں اور اس سیٹ پر بی جے پی کی جیت تقریبا طے مانی جارہی تھی۔
لوک سبھا حلقہ کے پانچوں اسمبلیوں میں 32 ویں راؤنڈتک تمام 729991 ووٹوں کی گنتی ہونے پر ایس پی امیدوار ناگیندر سنگھ پٹیل کو 342796 اور بی جے پی امیدوار کوشلیندر پٹیل کو 283183 ووٹ ملے۔ آزاد امیدوارعتیق احمد نے 48087 ووٹ حاصل کرکے تیسرے مقام پر رہے۔ کانگریس کے امیدوارمنش مشرکو 19334 ووٹ ملے۔ دوسری جانب گورکھپور میں ایس پی کے پروین نشادنے اس اہم سیٹ پر تقریباً 26 ہزار ووٹوں کے فرق سے جیت حاصل کی ہے۔
دونوں پارلیمانی نشستوں کے لئے ووٹوں کی گنتی بدھ کی صبح 8 بجے سے سخت سیکورٹی بندوبست کے درمیاں شروع ہوئی ۔ پھولپور میں ووٹوں کی گنتی کے پہلے مرحلہ سے ہی سماجوادی پارٹی کے امیدوار ناگیندر سنگھ پٹیل نے سبقت لے لی تھی اور ان کی اس سبقت کا سلسلہ آخر تک جاری رہا۔ بی جے پی کے کوشلیندر پٹیل وہاں شروعات سے ہی دوسرے مقام پر رہے جبکہ آزاد امیدوار عتیق احمد اور کانگریس کے منیش مشر بالترتیب تیسرے اور چوتھے مقام کے لئے جدوجہد کرتے نظر آئے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *