عراق میں لاپتہ 39ہندوستانیوں کوآئی ایس آئی ایس نے مارا:سشماسوراج

Sushma-Swaraj
راجیہ سبھا میں وزیرخارجہ سشماسوراج نے عراق کے موصل میں لاپتہ ہوئے 39ہندوستانی شہریوں کولیکر بڑا بیان دیاہے۔سشماسوراج نے کہاکہ موصل میں اغوا 39ہندوستانی مار دےئے گئے ہیں۔انہو ں نے کہاکہ سبھی مرنے والوں کے ڈی این اے سے بھی یہ صاف ہوچکاہے کہ وہ سبھی مارے گئے ہیں۔وزیرخارجہ نے کہاکہ 39ہندوستانیوں کا قتل آئی ایس آئی ایس نے کیاہے۔ انہو ں نے یرغمال بنائے جانے کی کہانی جھوٹی تھی۔
راجیہ سبھا میں سشمانے اپنی جانب سے دےئے گئے ایک بیان میں بتایاکہ جون 2015میں عراق کے موصل شہرمیں دہشت گردتنظیم آئی ایس آئی ایس نے کم سے کم 40ہندوستانیوں کا اغوا کیاتھا۔ان میں ایک شخص خود کوبنگلہ دیشی سے آیامسلم بتاکر بچ نکلا۔باقی 39ہندوستانیوں کوبدوش لے جاکرمارڈالا گیا۔انہو ں نے بتایاکہ اغواہندوستانیوں کوبدوش شہر لے جائے جانے کے بارے میں جانکاری اس کمپنی سے ملی جہاں یہ ہندوستانی کام کرتے تھے۔
انہوں نے بتایا کہ قتل کے بعد زمین میں دفن کئی گئیں تمام لاشوں کو ڈیپ پنٹریشن ریڈار کے ذریعے تلاش کر لیا گیا ہے۔ لاشوں کو باہر نکال کر ان کا ڈی این اے ٹیسٹ بھی کیا گیا ہے۔سشما نے راجیہ سبھا ارکان سے خطاب کرتے ہوئے کہا، “لاشوں کی باقیات کو بغداد بھیجا گیا، جہاں ان کے ڈی این اے نمونے لئے گئے اور انہیں پنجاب، ہماچل پردیش، مغربی بنگال اور بہار میں موجود ان کے رشتہ داروں کے پاس بھیجا گیا۔ کل ہمیں معلومات ملی کہ 38 لاشوں کے ڈی این اے میچ کر گئے ہیں اور 39 ویں شخص کا ڈی این اے 70 فیصد میچ کیا ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں   محمدسمیع کے گھرپہنچی کولکاتہ پولیس

 

سشما نے بتایاکہ ریاستی وزیرخارجہ وی کے سنگھ نے عراق میں ہندوستانی ہائی کمشنراورعراق سرکارکے ایک افسرکے ساتھ بدوش شہر جاکر جب اغوا ہندوستانیوں کی تلاشی شروع کی تب مقامی لوگو ں نے بتایاکہ آئی ایس آئی ایس دہشت گردوں نے کچھ لاشیں دفنائے ہیں۔وزیرخارجہ نے بتایاکہ ’ڈیپ پینٹریشن رڈاروں‘ کی مددسے پتہ لگایاگیا کہ جس گڈھے میں لاشیں دفنائے جانے کی جات کہی جارہی ہے، اس میں سچ مچ کیا۔ رڈاروں سے جانچ کرنے پرپتہ چلا کہ گڈھے میں لاشیں ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *