جے این ایم سی، اے ایم یو کے آرتھوپیڈک سرجری شعبہ کی ایلومنائی و سائنٹفک میٹ کا انعقاد

meet2018
جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج(جے این ایم سی) ، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے آرتھوپیڈک سرجری شعبہ کی جانب سے منعقد سابق طلبہ کے اجلاس ’جے این ایم سی آرتھو ایلومنائی سائنٹفک میٹ‘ میں ملک و بیرون ملک سے ڈیڑھ سو سے زائد سابق طلبہ شامل ہوئے۔ اس موقع پر حاضرین نے آرتھوپیڈکس میں جدید تحقیق پر گفتگو کرنے کے ساتھ ہی پرانی یادوں کو تازہ کیا۔ جے این ایم سی کے آڈیٹوریم میں منعقد پروگرام کا افتتاح وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کیا۔ انھوں نے اپنے خطاب میں کہاکہ دنیا بھر میں پھیلے اے ایم یو کے سابق طلبہ طالبات اپنے مادر علمی سے گہرا جذباتی رشتہ رکھتے ہیں اور وہ ادارے کی ترقی میں سرگرم کردار ادا کررہے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ امریکہ میں مقیم سابق طلبہ کے تعاون سے یونیورسٹی میں علیگ اکیڈمک اِنرچمنٹ پروگرام (اے اے ای پی) کے تحت میڈیسن، مینجمنٹ ، انجینئرنگ فیکلٹی اور بایوکیمسٹری شعبہ میں سابق طلبہ ان فیکلٹیوں اور شعبوں کے طلبہ طالبات کی رہنمائی کررہے ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ وہ اس بات کے لئے کوشاں ہیں کہ نہ صرف غیرملکوں بلکہ ملک کی مختلف ریاستوں میں مقیم سابق طلبہ بھی اپنے مادر علمی کی مالی و تعلیمی ترقی میں تعاون کریں۔
پروفیسر طارق منصور نے جے این ایم سی کی حصولیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ آج یہ میڈیکل کالج ملک کے 10؍ممتاز میڈیکل کالجوں کی فہرست میں شامل ہے اور لگاتار ترقی کی راہ پر گامزن ہے۔ انھوں نے آرتھوپیڈک شعبہ میں جاری کاموں کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ اس شعبہ کے نئے بلاک کی تعمیر کے لئے جلد ہی رقم مہیا کرائی جائے گی۔ انھوں نے اس طرح کے پروگرام کالج، ہال اور شعبہ کی سطح پر بھی منعقد کئے جانے کی اپیل کی۔
مہمان اعزازی پرو وائس چانسلر پروفیسر تبسم شہاب نے اس موقع پر کہاکہ جے این میڈیکل کالج کے آرتھوپیڈک سرجری شعبہ کا شمار ملک کے نامور شعبوں میں ہوتا ہے اور یہاں کے طلبہ ملک و بیرون ملک میں کالج کا نام روشن کررہے ہیں۔ انھوں نے سابق طلبہ سے مادر علمی کے ترقیاتی کاموں میں شرکت کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ وہ ادارے کے تعاون کے لئے آگے آئیں۔ انھوں نے آرتھوپیڈک سرجری شعبہ کے سابق اساتذہ کے ذریعہ شعبہ کی ترقی کے لئے پیش کی گئی خدمات کو بھی یاد کیا۔ میڈیسن فیکلٹی کے ڈین اور جے این ایم سی کے پرنسپل پروفیسر ایس سی شرما نے کہا کہ اس طرح کے پروگراموں سے نہ صرف آپس میں ربط ضبط پیدا ہوتا ہے بلکہ سائنسی تعلیم کی بھی توسیع ہوتی ہے، اس سے سابق طلبہ کو ایک دوسرے سے ملنے کا موقع مل رہا ہے اوروہ طب کے میدان میں ہورہی نئی تحقیق سے بھی روبرو ہورہے ہیں۔
آرتھوپیڈک سرجری شعبہ کے سربراہ اور پروگرام کے آرگنائزنگ چیئرمین پروفیسر نیر آصف نے کہاکہ شعبہ میں پہلی بار اس طرح کا پروگرام منعقد کیا گیا ہے جس میں سابق طلبہ نے بہت دلچسپی دکھائی۔ انھوں نے شعبہ کے بانیان کو یاد کرتے ہوئے کہاکہ موجودہ وائس چانسلر کی مدت کار میں میڈیکل کالج میں سبھی سہولیات دستیاب ہورہی ہیں۔ شعبہ میں ویڈیوکانفرنسنگ بھی شروع ہوگئی، جس سے ملک و بیرون ملک سے سیدھا رابطہ ہوجائے گا۔
شعبہ کے سینئر استاد پروفیسر محمد خالد شیروانی نے پروگرام میں اعزاز سے نوازے گئے ریٹائرڈ اساتذہ پروفیسر ایس اے عراقی اور پروفیسر محمد زاہد کے علاوہ سابق طالب علم اور ایمس کے ہڈی امراض شعبہ کے سابق سربراہ پروفیسر محمد فاروق اور انگلینڈ سے تشریف لائے ڈاکٹر ایم سلمان علی کا بھی ذکر کیا۔
حاضرین کا شکریہ آرگنائزنگ سکریٹری اور سرجری شعبہ کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر سہیل احمد نے ادا کیا۔ نظامت کے فرائض سینئر ریزیڈنٹ ڈاکٹر ضیاء الہدیٰ شان نے ادا کئے۔ اس سے قبل سابق طلبہ کی ڈائرکٹری کا بھی اجراء عمل میں آیا۔
پروگرام کے سائنسی سیشن میں انگلینڈ کے ڈاکٹر راہض انور، ڈاکٹر ایم سلمان علی، ڈاکٹر ایس تنویر اشرف، ڈاکٹر ایس اصغر علی، ڈاکٹر وشال اُپادھیائے کے علاوہ اپولو اسپتال کے ڈاکٹر کے بی اَتری، لکھنؤ کے ڈاکٹر جمال اشرف اور ایمس نئی دہلی کے ڈاکٹر شاہ عالم خاں نے آرتھوپیڈک سرجری سے متعلق مختلف موضوعات پر خطاب کیا۔ اس کے علاوہ شعبہ کے ریٹائرڈ ٹیچروں پروفیسر ایس ایس صادق، پروفیسر آفتاب احمد عراقی اور پروفیسر محمد مجاہد کے ساتھ ساتھ شعبہ کے سابق طالب علم پروفیسر محمد فاروق اور ڈاکٹر ایم سلمان علی کو اعزاز سے نوازا گیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر جمال اشرف نے پروفیسر اے اے ایرانی انٹرنیشنل فیلوشپ دئے جانے کا اعلان کیا، جس کا خرچ جے این ایم سی آرتھوپیڈک ایلومنائی ایسوسی ایشن برداشت کرے گی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *