بنگلہ دیش : سابق وزیر اعظم خالدہ ضیا کو 5 سال کی سزا

Khaleda-Zia
بنگلہ دیش کی سابق وزیر اعظم اور بنگلہ دیش دیش نیشنل پارٹی (بی این پی) کی چیئر پرسن خالدہ ضیاء کو ضیاء ٹرسٹ سے متعلق بدعنوانی کے ایک معاملے میں قصور وار پائے جانے پر پانچ سال کے لئے جیل بھیج دیا گیا۔ اس معاملے میں خالدہ ضیاء کے بڑے بیٹے اور بی این پی کے سینئر وائس چیئرمین طارق رحمان اور چار دیگر افراد کو بھی 10 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ ڈھاکہ اسپیشل کورٹ۔5 کے جج ڈاکٹر اختر الزماں نے اس معاملے میں ملزمان کو قصوروار قرار دینے کے بعد سزا کا اعلان کیا۔
یتیم بچوں کے لئے جمع کئے گئے تقریبا 2.10 کروڑ کا غبن کرنے پر اینٹی کرپشن کمیشن نے 3 جولائی 2008 کو ضیاء یتیم خانہ ٹرسٹ کے بدعنوانی کا معاملہ رامنا تھانے میں درج کرایا تھا۔ اس معاملے میں جن دیگر ملزمان کو قصور وار پایا گیا ہے، ان میں سابق رکن پارلیمنٹ قاضی سلیم حق، بزنس مین شرف الدین احمد، خالدہ کے سابق پرنسپل سکریٹری کمال الدین صدیقی اور بی این پی کے بانی ضیا ء الرحمان کے بھتیجے مومن الرحمان شامل ہیں، جن کو اس معاملے 19 مارچ 2014 کو ملزم بنایا گیا تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *