انگریزوں کی جیت کا جشن منانے کولیکرپونے میں تشدد

violence-in-pune
نئے سال کے موقع پرریاست مہاراشٹرکے پونے شہرمیں کورے گاؤں، پبل اورشکارپورگاؤں کے لوگوں اوردلتوں کے بیچ جھڑپ ہوگئی ،جس میں ایک شخص کی مارے جانے کی خبرہے۔یہ تشددضلع میں بھیما-کورے گاؤں کی لڑائی 200ویں سالگرہ پرمنعقدایک تقریب کے دوران ہوئی۔دراصل 200سال پہلے انگریزوں نے یکم جنوری کے دن جولڑائی جیتی تھی اس کا جشن پونے میں منایاگیا۔لیکن یہ جشن متشددہوگیاکہ اس میں ایک شخص کی موت ہوگئی ۔اس کے ساتھ ہی پونے تشددمیں کئی گاڑیوں کوآگ کے حوالے کردیاگیا۔جانکاری کے مطابق، پیرکوشہرمیں کورے گاؤں بھیماکی لڑکی کی 200ویں سالگرہ منائی گئی۔
پولس کے مطابق، دلت کمیونٹی کے پانچ لاکھ سے زیادہ لوگ بھیم کورے گاؤں کی 200ویں سالگرہ منانے کیلئے پونے شہرمیں جمع ہوئے تھے۔اس لڑائی میں برطانیہ فوجیوں نے یکم جنوری 1818کوپیشواباجی راؤ کی فوج کوشکست دی تھی۔ہرسال ایک جنوری کوہزاروں دلت جیستنبھ تک مارچ کرتے ہیں۔بتایاجاتاہے کہ اس لڑائی میں کچھ تعدادمیں ایسے دلت بھی تھے جنہو ں نے انگریزوں کی طرف لڑائی لڑی تھی۔ جیت کے بعدکورے گاؤں بھیمامیں یادگارکے طورپرجیستنبھ بنوایاتھا۔اپنی جیت کاجشن منانے کیلئے دلت کمیونٹی کے لوگ ہرشہرمیں جمع ہوتے ہیں اوراس جستنبھ تک مارچ کرکے جشن مناتے ہیں۔
تشددکی مذمت کرتے ہوئے شردپوارنے کہاکہ لوگ وہاں سے دوسوسال سے جارہے ہیں ایساکبھی نہیں ہوا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *