غیرشادی شدہ خواتین ہوئیں بیدار،کنڈوم کے استعمال میں اضافہ

Condoms
ملک میں غیرشادی شدہ خواتین اب محتاط ہوتی نظرآرہی ہیں،شادی کے بغیرسیکس تعلقات بنانے والی خواتین محفوظ سیکس کواہمیت دے رہی ہیں۔وزارت صحت کے ذریعے کروائے گئے نیشنل فیملی ہیلتھ سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ غیرشادی شدہ خواتین میں محفوظ سیکس کرنے کے اعدادوشمارمیں اضافہ ہواہے۔سروے 2015-16کے مطابق، گذشتہ 10سالوں میں 15سے 49سال کی غیرشادی شدہ خواتین میں کنڈوم کے استعمال کرنے میں2فیصدسے 12فیصدہوگیاہے اور20سے24سال کی غیرشادی شدہ خواتین میں کنڈوم کا استعمال سب سے زیادہ بڑھاہے۔اس کے بعد25سے 49سال کی خواتین مانع حمل کے طورپراپنی نس بندی کواہمیت دیتی ہیں۔وہیں ،ایمرجنسی مانع حمل اشیاء پل کا استعمال کرنے والی خواتین کے اعدادوشمار1فیصدسے بھی کم ہے۔
وہیں 15سے 49سال کے بیچ ملک کے 99فیصدشادی شدہ خواتین اورمردوں کومانع حمل کے کم سے کم ایک طریقے کی جانکاری ضرور ہے۔لیکن افسوس اتنی تعدادمانع حمل اپنانے والوں کی نہیں ہے۔اس خواتین کے بیچ contraceptive pills rates یعنی مانع حمل گولیوں کی شرح صرف 54فیصدہے جس میں صرف 10فیصدخواتین ایسی ہیں جوحمل کوروکنے کیلئے معدنیات گولیاں اورintrauterine deviceشامل ہے، لیکن یہ اعدادوشمارکم نہیں جس میں اب بھی خواتین حمل روکنے کیلئے صدیوں پرانے طریقے کااستعمال کرتی ہیں۔
سروے کے مطابق، سب سے زیادہ کنڈوم کا استعمال کرنے والی خواتین 20سے 24کے بیچ کی ہیں تووہیں 15سے 49سال کی لڑکیاں اورخواتین کابھروسہ کنڈوم کے تئیں فیصدمیں اضافہ ہواہے۔رپورٹ یہ بھی کہہ رہی کہ 8میں سے 3مردوں کا کہناہے کہ حمل روکنے کے ذمہ داری خواتین کی ہوتی ہیں ایسے میں وہ کنڈوم کا استعمال کریں یاپھردوائیوں کا۔ مردوں کواس سے کوئی لینادینانہیں ہے۔
ملک کے مختلف حصوں پرنظرڈالیں توحمل روکنے کے استعمال کی فہرست میں 76فیصدکے پنجاب پہلے نمبرپرہے اورسب سے پیچھے رہنے والے ریاستوں میں منی پور، بہار اورمیگھالیہ ہے جس میں اس کا استعمال 24فیصدرہاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *