دارالعلوم ودارالعلوم وقف دیوبندسمیت دیگرمدارس وعصری اداروں میں یوم جمہوریہ تقریبات کااہتمام

Share Article
Darul-Uloom-Waqf
ملک کا 69واں یوم جمہوریہ شاندار اور روایتی انداز میں منایا گیا۔اس موقع پر دیوبند دارالعلوم دیوبند ،دارالعلوم وقف دیوبند اور جامعہ امام محمد انور شاہ اور مدرسہ تعلیم القرآن دارالمسافرین (قدیم اصغریہ ) اور دیگر مدارس وعصری اداروں نیز سرکاری د فاتر اور میونسپل بورڈ کے احاطہ میں جشن جمہور یہ کا شاندار اہتمام کیا گیااور پرچم کشائی کی گئی ۔
Sadar-Gate-darul-uloom
اس دوران دارالعلوم وقف میں یوم جمہوریہ کے سلسلے میں ایک تقریب کا انعقاد عمل میں آیا جس میں ادارہ کے مہتمم مولانا سفیان قاسمی نے یوم جمہوریہ کے سلسلے میں تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے آزادی میں علماء اور مدارس کے کردار کو بیان کیا مولانا نے کہا کہ دارالعلوم دیوبند کے قیام کے مقاصد میں اہم مقصد ملک کو آزاد کرانے والے مجاہدین کا گروہ تیار کرنا بھی تھا چنانچہ تاریخ میں یہ بات رقم ہے کہ دارالعلوم دیوبند کے فرزندوں نے ملک کے دیگر طبقات کے ساتھ ملکر انگریز معلون کو اس ملک سے بھاگنے پر مجبور کردیا۔
یوم جمہوریہ کے اس موقع پر جامعہ امام محمد انور شاہ میں منعقدہ جشن جمہوریہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے ادارہ کے مہتمم مولانا احمد خضر شاہ مسعودی نے کہا کہ کوئی ملک جب تک آباد نہیں ہو سکتا جب تک اس ملک کے اندر قربانی نہ دی جائے۔ مجھے افسوس ہے کہ ہمارے ملک کے ہندو مسلمان بھائی ملک کی آزادی کی تاریخ کو بھولتے جا رہے ہیں۔ ہم ہندو ،مسلم سکھ، عیسائی بھائیوں کی مشترکہ قربانی سے یہ ملک آزاد ہوا اور جمہوری قوانین اس ملک کے اندرنافذ کئے گئے۔مولانا نے کہا کہ کوئی بھی مذہب خواہ ہندو ہو یا مسلمان ہو ، سکھ ہو یا عیسائی ہو یہ نہیں بتاتا کہ کسی کی دل آزاری کی جائے یا تبدیلی مذہب کی بات کی جائے۔
مدرسہ تعلیم القرآن دارالمسافرین میں ادارہ کے مہتمم سید عقیل حسین میاں نے پرچم کشائی کی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ملک کی گنگا جمنی تہذیب کی بقاء کے لئے ہمیں کوشش ومحنت کرنی ہوگی ملک میں جمہوری حکومت کے نفاذ کے لئے ہمارے اکابرین نے جو قربانیاں دیں ہیں وہ ناقابل فراموش اور آب زر سے لکھے جانے کے لائق ہے۔جامعہ طبیہ دیوبند میں ڈاکٹر انور سعید ،اسپرنگ ڈیل پبلک اسکول میں چیئرمین سعد صدیقی نے پرچم کشائی کی اور ساتھ ہی اسکول میں ثقافتی پروگرام پیش کئے گئے جس میں بچوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور یوم جمہوریہ کا جشن منایا اس موقع پرسعد صدیقی نے بچوں اورتمام اہل وطن کو مبارکباد دیتے ہوئے اپنے صدارتی خطاب میں پروگرام پیش کرنے والے بچوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ تعلیم ہی وہ واحد ذریعہ ہے جس کی مدد سے آپ اپنے ماضی اور اس ملک کو آزاد کرانے کی تاریخ سے واقف ہوسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آپ اپنے ماضی سے ناطہ جوڑکرہی کامیاب انسان بن سکتے ہیں۔انہوں نے آزادی کی تاریخ بتاتے ہوئے تعلیم کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔
معہد عائشہ صدیقہ قاسم العلوم للبنات دیوبند کی پرنسپل عفت ندیم نے سفید مسجد دیوبند پر واقع طالبات کے مشہور ادارہ معہد عائشہ صدیقہ قاسم العلوم للبنات دیوبند میں منعقدہ جشن یوم جمہوریہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جہاد آزادی کا علم سب سے پہلے ہمارے علماء نے ہی بلند کیا اور انہوں نے افضل الجہاد کلم حق عند سلطان جائر کہہ کر انگریز کے خلاف جہاد کو فرض قرار دیا اور 1857کی جہاد آزادی میں صرف علماء ہی تھے جو انگریزوں کے خلاف برسر پیکار رہے۔پروگرام کی صدارت محترمہ عفت ندیم نے کی جبکہ نظامت کے فرائض جامعہ کی معلمہ گلفشاں راؤ نے بحسن وخوبی انجام دیئے۔ادارہ کا جملہ اسٹاف وطالبات موجود رہیں ۔
دوسری جانب نگرپالیکا پریشد کے احاطہ میں چیئر مین محمد ضیاء الدین نے پرچم کشائی کے بعد اپنے خطاب میں تمام اہل دیوبند واہل وطن کو یوم جمہوریہ کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے فرقہ وارانہ ہم آہنگی بنائے رکھنے اور اس ملک کی گنگا جمنی تہذیب کو قائم رکھنے کی اپیل کی۔ علاوہ گورنمنٹ ڈگری کالج ،اسلامیہ ڈگری کالج ،گورنمنٹ گرلز انٹر کالج ،اسلامیہ انٹرکالج،ایچ اے وی انٹر کالج،جین انٹرکالج ،رام کرشن انٹر کالج، دون ویلی پبلک اسکول،گرورام رائے انٹرکالج،کے ایل جنتاانٹر کالج،جین کنیا گرلز اسکول،مولانا مدنی میموریل اسکول،حاجی بلال میموریل پبلک اسکول اسکول کے منیجر سید شارق حسین میاں نے پرچم کشائی کی اور حب الوطنی پر تفصیلی روشنی ڈالی،جامعہ للبنات ،نئی روشنی پبلک اسکول،امن نرسری پبلک اسکول ،مدرسہ تدریس القرآن محلہ قلعہ ،میں یوم جمہوریہ کے موقع پر شاندار ثقافتی پروگرام پیش کئے گئے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *