خاتون نے محبت کی مثال قائم کرکے دنیاکوالوداع کہا

heather-mosher
کسی نے کہاہے کہ راحت وسرورہویارنج وغم، نفع ہویانقصان، ہرحال میں اپنی خواہش کوختم کرکے محبوب کی خواہش کے سامنے سرتسلیم خم کردینے کا نام محبت ہے۔کسی نے یہ بھی کہاہے کہ محبت اورپیارایک ہی چیزکے دونام ہیں،کسی چیزکواچھااورمفیدسمجھ کراس کاادارہ کرنا اوراسے چاہنامحبت ہے۔ایسی ہی ایک سچی پیارومحبت کی کہانی دنیاکے سامنے آئی ہے۔اس کہانی نے پوری دنیامیں جہاں سچے پیارکی ایک مثال قائم کی ہے،وہیں پوری دنیاکی آنکھیں بھی نم کرگئیں۔
دراصل ،یہ کہانی امریکہ کی نیوجرسی کی رہنے والی ہیتھرماشر کی ہے۔بریسٹ کینسرسے متاثرہ 31سال کی ہیتھرموشر نے موت سے محض 18گھنٹے پہلے اپنے بوائے فرینڈسے شادی رچائی۔بتایاجارہاہے کہ امریکہ کے ہیتھرموشراورڈیوڈ موشرنے 22دسمبرکوامریکہ کے سینٹ پرانسس اسپتال میں شادی کی۔جس کے 18گھنٹے کے بعدہیتھرموشرنے آخری سانس لی۔ڈبلیوایف ایس بی کی خبرکے مطابق، ہیتھرکوبریسٹ کینسرتھا۔انہو ں نے اسپتال میں ہی شادی کی ساری تیاریاں کی تھیں۔انہوں نے شادی کاسفیدگاؤن پہنااورشادی کی بندھن میں بندھی۔
ہارٹ فورڈ کے سینٹ فرانسس اسپتال اورمیڈیکل سینٹرمیں ہیتھرنے اپنے بوائے فرینڈڈیوڈ موشرسے شادی کی۔اس وقت وہ سب سے زیادہ خوش نظرآرہی تھیں۔ڈاکٹرپہلے ہی بول چکے تھے کہ وہ زیادہ دن تک نہیں جی پائیں گی۔اس کے بعدانہو ں نے شادی کے خوبصورت پل کوخوب انجوائے کیا۔اسپتال میں ہیتھراورڈیوڈ کے رشتے داربھی پہنچے تھے،جن کارو روکر براحال تھا،لیکن سب سے زیادہ ہیتھرزیادہ خوش تھیں۔
heather-mosher1
بتایاجاتاہے کہ 31سالہ ہیتھرکی ڈیوڈسے پہلی ملاقات 2015میں ایک سونگ ڈانسنگ کلاس میں ہوئی تھی۔دونوں قریب ایک سال ریلیشن شپ میں رہے۔جس کے بعدڈیوڈ نے دسمبر2016کوشادی کیلئے پرپوزکرنے کوسوچا لیکن تبھی ہیتھرکوپتہ چلاکہ انہیں کینسرہے۔اس کے بعدبھی ڈیوڈ نے ہارنہیں مانی اورانہیں شادی کے پرپوزکیلئے پوری تیاری کرلیں اورپرپوزکیا۔ڈیوڈ نے کہاکہ ’اسے نہیں معلوم تھاکہ اس رات میں شادی کیلئے پرپوزکرنے جارہاہوں، لیکن میں نے من میں سوچ لیاتھاکہ اس راستے میں ہیتھراکیلے نہیں چلے گی میں بھی اس کاپوراساتھ دونگا‘‘۔
ہیتھرنے کینسرسے جنگ لڑی اورانہو ں نے کئی بارکیموتھیروپی کرائی،لیکن ان کی حالت بگڑتی چلی گئی اورایک دن وہ وینٹی لیٹرتک پہنچ گئیں۔ہیتھرکی آخری خواہش ڈیوڈ سے شادی کرنے کی تھی۔پہلے دونوں کی شادی 30دسمبرکوہونے والی تھی ۔لیکن ان کی حالت کودیکھتے ہوئے ڈاکٹروں نے شادی کوپہلے کرنے کی صلاح دی۔جس کے بعدان کی شادی 22دسمبرکواسپتال میں ہوئی۔ان کی شادی میں فیملی کے کچھ چنندہ لوگوں کے ساتھ دیکھ بھال کرنے والے کئی ڈاکٹرس اورنرس شادی میں شامل ہوئے تھے۔لیکن شادی کے اگلے دن ہی 23دسمبرکومحض 18گھنٹے ہی ہیتھراس دنیاسے ہمیشہ کیلئے رخصت ہوگئیں۔دنیاسے رخصت ہوتے ہوتے بھی وہ دنیابھرکے عاشقوں اورمعشوقوں کیلئے محبت کی ایک خوبصورت مثال قائم کرگئیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *