کارتی چدمبرم کے ٹھکانوں پر ای ڈی کے چھاپے

karti-chidambaram
انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ(ای ڈی)کے افسران نے سنیچر کو سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے کارتی چدمبرم کے ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کی۔ای ڈی کے پانچ افسرصبح ساڑھے سات بجے چدمبرم کے گھر پہنچے اور قریب ساڑھے تین گھنٹے تک چھان بین کرنے کے بعد گیارہ بجے وہاں سے نکلے۔ ای ڈی افسروں کے اس چھاپے کے دوران چدمبرم یا ان کے بیٹے کارتی چدمبرم چنئی میں واقع اپنے گھر میں موجود نہیں تھے۔ چھاپہ ماری کے بعد چدمبرم کے وکیل نے کہا کہ ای ڈی افسروں کو چھاپے میں کچھ بھی نہیں ملا۔واضح ہوکہ کارتی چدمبرم کو 2 جی گھوٹالے سے جڑے ایئر سیل میکسس ڈیل معاملے کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کی سخت پھٹکار جھیلنی پڑی تھی۔ اس سے قبل ستمبر 2017 میں ای ڈی نے کارتی چدمبرم کی دہلی اور چنئی میں کئی جائیدادیں ضبط کی تھیں۔ جانچ کے دوران ای ڈی کو پتہ چلا کہ ایئر سیل میکسس کیس میں ایف آئی پی بی اپروول سابق وزیر پی چدمبرم کے ذریعہ دیا گیا تھا۔اس کے ساتھ ہی ای ڈی کو یہ پتہ چلا کہ کارتی اورپی چدمبرم کی بھتیجی کی کمپنی کو میکسس گروپ سے دو لاکھ ڈالر ملے تھے۔
مرکزی جانچ ایجنسی ایئرسیل میکسس ڈیل میں سابق وزیر پی چدمبرم کے رول کی بھی جانچ کررہی ہے۔ ان پر 2006میں ملیشیائی کمپنی میکسس کے ذریعہ ایئر سیل میں 100 فیصد حصہ داری حاصل کرنے کے معاملے میں رضامندی دینے کو لے کر بے ضابطگیاں برتنے کا الزام ہے۔ جانکاری کے مطابق ایئر سیل میکسس ڈیل سے جڑی مبینہ بے ضابطگیوں کے سلسلے میں ای ڈی افسران نے دہلی اور چنئی میں واقع پانچ مقامات پر چھاپہ ماری کی۔ان میں سے ایک ٹھکانہ دہلی کے جنگ پورہ میں جبکہ چار دیگر چنئی میں ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *