جامعہ طبیہ دیوبند میں حجامہ ٹریننگ لینے والوں میں سرٹیفکیٹ تقسیم

Jamia-Tibbiya-Me-Cartifict-
جامعہ طبیہ دیوبند میں ہارٹ امیونو حجامہ اکیڈمی آف ریجی مینٹل تھراپی دیوبند کی جانب سے حجامہ کی ٹریننگ لینے والے افراد کو جامعہ طیبہ کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر انور سعید اور اکیڈمی کے صدر ڈاکٹر محمد یونس کے ہاتھوں سرٹیفکٹ تقسیم کئے گئے۔ اس موقع پر پروگرام کے مہمان خصوصی ڈاکٹر انور سعید نے اکیڈمی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر طیب انجم کی اس کاوش کر سراہتے ہوئے کہا کہ حجامہ کی ٹریننگ دینا ایک قابل ستائش قدم ہے۔ انہوں نے کہا کہ قدیم زمانہ میں فن اطباء کے سینوں میں دفن ہوکر رہ جاتا تھا لیکن اب طب یونانی کے فن کو اس قسم کی کوششوں سے رفاہِ عامہ کے لئے زیادہ سے زیادہ ترویج دی جا رہی ہے۔ ساتھ ہی ساتھ ڈاکٹر انور سعید نے یہ تاکید بھی کی کہ اکیڈمی کو بذات خود سرٹیفکٹ دینے کے بجائے کسی ایسے داراہ سے یہ سرٹیفکٹ حاصل کرنا چاہئے جو قابل اعتبار اور سرکاری حیثیت کا حامل ہو تاکہ یہ سرٹیفیکیٹ معاش کے سلسلہ میں زیادہ مضبوطی کے ساتھ وابستہ ہو سکے۔
ڈاکٹر انور سعید نے کہا کہ آج کے زمانے میں ایلوپیتھک دوائیوں کے استعمال سے خاص طور پرجوڑوں کے درد کے مریضوں میں کافی اضافہ ہو رہا ہے، جو ایک فکر کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کے دور میں یونانی دواؤں سے اچھا اور کارگر علاج نہیں ہے جس کے انسان کے جسم پر کوئی بھی مضر اثرات ظاہر نہیں ہوتے ہیں۔ اس دور میں ایلوپیتھک دواؤں کو چھوڑکر مریض یونانی کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ جس کو دیکھتے ہوئے آیوش ڈپارٹمنٹ بھی اس پر کافی توجہ دے رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ طب یونانی انسانی فطرت اور اس کی ضرورت سے مناسبت رکھتی ہے اور حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرات صحابۂ کرام سے طب یونانی کے ذریعہ علاج کرنا ثابت ہے۔ مولاناآزاد پیرا میڈیکل کالج کے ڈائریکٹر ڈاکٹر یونس صدیقی نے کہا کہ طب یونانی سے علاج کرانے میں بہتر نتائج کے ساتھ ساتھ سنت نبویؐ کو زندہ کرنے کا بھی موقع ملتا ہے ۔ انہو ں نے حجامہ کے فائدہ گنواتے ہوئے اسے بہترین علاج قرار دیا ۔اس موقع پر ڈاکٹر طاہر صدیقی، ڈاکٹر زید، ڈاکٹر حارث، ڈاکٹر معید، ڈاکٹر یسریٰ، ڈاکٹر شارق، شاہنواز، محمد دانش وغیرہ موجود رہے۔ آخر میں اکیڈمی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر طیب انجم نے حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *