موہالی ونڈے میں روہت کا ’ڈبل‘دھمال،ٹیم انڈیا نے سری لنکا کو 141 رنوں سے دی کراری شکست

rohit-sharma

 

دھرمشالہ ونڈے میں اپنی بلے بازی کے باعث تنقیدوں کاشکاربنی روہت شرماکی ٹیم انڈیانے موہالی کے دوسرے ونڈے میں رنوں کا انبارلگادیا۔بلے بازوں کے اس زبردست کارکردگی کی بدولت دوسرے ونڈے میں 13دسمبرکوسری لنکاکو141رن کے بڑے فرق سے ہراکرسیریز1-1سے برابرکرلی۔ٹیم انڈیاکے اس شاندارکارکردگی کی قیادت خودکپتان روہت شرمانے کی ۔ کپتان روہت شرما کی شاندار ڈبل سنچری کی بدولت ہندوستان نے سری لنکا کو 141 رنوں کی کراری شکست دی۔ روہت شرمانے 153گیندوں پر13چوکوں اور12چھکوں کی مددسے ناباد208رن بنائے۔نودت شرےئس ایرنے 88اورشیکھردھون نے 68رن بنائے۔بہرکیف ٹاس ہار کر پہلے بلے باز ی کرنے اتری ٹیم انڈیا نے روہت کی شاندار اننگز کی بدولت مقررہ50 اوورس میں چار وکٹ کے نقصان پر 392 رن بنائے اور سری لنکا کو جیت کیلئے 393 رنوں کا ہمالیائی اسکور دیا۔ اس کے جواب میں سری لنکا 8 وکٹ گنوا کر مقررہ 50 اوورس میں صرف 251 رن ہی بناسکی۔ سری لنکا کی طرف سے میتھیوز نے 111 رنوں کی اننگز کھیلی۔

 

 

 

 

 

ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ میں روہت سب سے زیادہ تین ڈبل سنچری بنانے والے دنیا کے پہلے بلے باز بن گئے ہیں۔ یہ ان کا ون ڈے میں ذاتی طور پر تیسرا بہترین اسکور ہے جبکہ ون ڈے تاریخ میں اوور آل یہ ان کا چھٹا بہترین اسکور بھی ہے۔
روہت نے اپنی 16 ویں ون ڈے سنچری 115 گیندوں میں مکمل کی جبکہ 133 گیندوں میں اپنے 150 رن مکمل کئے۔ اس کے بعد انہوں نے چوکے چھکے کی بارش کرتے ہوئے 151 گیندوں میں 200 رن پورے کئے۔روہت نے اپنی ڈبل سنچری مکمل ?رنیے کے ٹھیک بعد چھکا بھی لگایا۔ ان کی اس بہترین اننگز سے اسٹینڈ میں موجود ان کی بیوی کافی جذباتی ہوگئی تھیں جبکہ ڈگ آؤٹ میں ہندوستانی کوچ روی شاستری اور باقی کھلاڑیوں کے ساتھ میدان پر سری لنکائی کھلاڑیوں نے بھی روہت کو مبارک باد دی۔ 30 سالہ بلے باز روہت نے اسی کے ساتھ ایک روزہ بین الاقوامی کیریئر کا تیسرا سب سے بڑا اسکور بھی اپنے نام کیا۔ ون ڈے میں تین ڈبل سنچری بنانے والے روہت کا سری لنکا کے خلاف یہ دوسرا بڑا اسکور بھی ہے۔ انہوں نے سال 2014 میں سری لنکا کے خلاف اپنے کیریئر کی سب سے زیادہ 264 رنز کی اننگز کھیلی تھی جبکہ آسٹریلیا کے خلاف سال 2013 میں انہوں نے 209 رن بنائے تھے جو ان کا ون ڈے میں پہلی ڈبل سنچری تھی۔سال 2016 میں انہوں نے آسٹریلیا کے خلاف 171 رنز کی اننگز کھیلی تھی لیکن سری لنکا کے خلاف بدھ کو دوسرے ون ڈے میں انہوں نے ناٹ آؤٹ 208 رن بنانے کے ساتھ ساتھ ون ڈے میں اپنی تیسرا بہترین اسکور بھی اپنے نام کردیا۔ اگرچہ اپنے دوسرے بہترین اسکور سے وہ صرف ایک رن ہی پیچھے رہے۔
بہرحال ایک سرے پر جم کر رن بنانے والے روہت کا ساتھ دوسرے سرے پر شکھر دھون اور پھر شريس ایر نے بھی دیا،جنہوں نے نصف سنچری اننگز کھیلی۔ روہت کا ساتھ شکھر نے پہلے وکٹ کے لئے 115 رن جبکہ دوسرے سرے پر ایر نے 213 رن کی ڈبل سنچری شراکت کرتے ہوئے موہالی کے گراؤنڈ پر ہندوستان کا سب سے بڑا اسکور بنا یا۔ دھون نے 67 گیندوں کی اننگز میں نو چوکے لگا کر 68 رن اور اپنا محض دوسرا ون ڈے کھیل رہے ایر نے 70 گیندوں میں نو چوکے اور دو چھکے لگا کر 88 رن بنائے۔ 23 سالہ کھلاڑی کی یہ پہلی ون ڈے نصف سنچری ہے انہوں نے دھرم شالہ میں ہی اپنا پہلا ون ڈے کھیلا ہے جبکہ دھون کی یہ 23 ویں نصف سنچری ہے۔
آئی ایس بندراپی سی اے اسٹیڈیم میں سری لنکا کے کپتان تشارا پریرا نے 80 رن دے کر ہندوستان کے تین وکٹ حاصل کیے اور اکیلے کامیاب گیندباز بھی رہے جبکہ پاتھرانا کو 63 رن پر ایک وکٹ ملا۔ نوان پردیپ ٹیم کے سب سے مہنگے گیندباز رہے جنہوں نے 10 اوور میں 106 رن دیے اور کوئی وکٹ حاصل نہیں کرسکے۔ اس کے علاوہ سرنگا لکمل نے 71 رن لٹايے۔ میچ میں سری لنکا کے کپتان نے اپنی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی تھا جبکہ ہندوستانی ٹیم میں 18 سالہ واشنگٹن سندر کو ون ڈے میں قدم رکھنے کا موقع ملا۔ وہ ہندوستان کے لیے پہلی مرتبہ کھیلنے والے ساتویں سب سے نوجوان کھلاڑی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *