راجستھان میں’لوجہاد‘ کے نام پر ایک مسلم شخص کاقتل ،ویڈیووائرل

muder-in-rajasthan
راجستھان کے راجسمندشہرمیں کلکٹرآفس سے محض 6سومیٹرکی دوری رونگٹے کھڑے دینے والے واقعہ کا ویڈیووائرل ہواہے۔’لوجہاد‘کے نام پرایک شخص کا قتل کردیاگیا۔اس واقعہ کے بعدپولس اورانتظامیہ کے اعلی ٰ افسران راجسمندپہنچ گئے ہیں۔راجستھان سرکارنے پورے معاملے کی جانچ کیلئے ایس آئی ٹی کی تشکیل کی ہے۔بی بی سی کے مطابق، ملزم شنبھولال کوپولس نے آج 7دسمبرکوگرفتارکرلیاہے۔شنبھولال نے قتل کے ویڈیوکے علاوہ دواورویڈیوشیئرکئے ہیں جن میں سے ایک ویڈیومیں وہ مندرمیں ہیں اورقتل کی ذمہ داری لے رہے ہیں،جبکہ دوسرے ویڈیومیں بھگواپرچم کے سامنے بیٹھے ہیں اور’لوجہاد‘اور’اسلامک جہاد‘کے خلاف تقریرکررہے ہیں۔اس معاملے میں پولس کا کہناہے کہ ملزم اورمتوفی محمدافرازل کے بیچ کوئی جھگڑایاکوئی تعلقات ہونے کی ابھی تک کی جانچ میں تصدیق نہیں ہوئی ہے۔پولس کے مطابق، متوفی محمدافرازل پچھلے 12سالوں سے شہرمیں رہ رہے تھے ۔وہ بنیادی طورپربنگال کے رہنے والے تھے اوراجسمندمیں رہ کرمزدوری کرتے تھے۔
انسپکٹرجنرل آنندسری واستو کاکہناہے کہ ابھی تک جانچ میں پتہ چلاہے کہ ملزم شنبھولال کے خاندان میں کسی بھی خاتون نے غیرقانونی یامتضاددھرم شادی نہیں کی ہے۔انہو ں نے کہاکہ ملزم نے ویڈیومیں نفرت پھیلانے والی زبان کا استعمال کیاہے۔ہم لوگوں سے اپیل کرتے ہیں کہ اس ویڈیوکوشیئرنہ کریں۔انہو ں نے کہاکہ حالات کودیکھتے ہوئے ہم نے راجسمند، ادے پوراورآس پاس کے علاقوں میں انٹرنیٹ بندکردیاہے اورکثیرتعدادمیں سیکوریٹی تعینات کئے ہیں۔
واقعہ کا ویڈیوسوشل میڈیاپروائرہواہے جس میں نظرآرہاہے کہ ایک شخص پردھاردارہتھیارسے حملہ کرکے انہیں آگ کے حوالے کردیاہے۔ملزم نے ویڈیومیں کہاہے کہ’یہ تمہاری حالت ہوگئی، یہ لوجہادکرتے ہو ہمارے دیش میں۔یہ تمہارے ہرجہادی کی حالت ہوگی، لوجہادبندکردو‘‘۔ملزم نے قتل کے ویڈیوکے علاوہ دواورویڈیوجاری کئے ہیں جس میں سے ایک میں انہو ں نے قتل کی بات کہی ہے اورمیواڑی کمیونٹی کے سامنے عدالت میں پیش ہونے کی بات کہی ہے۔دوسرے ویڈیومیں بھگواپرچم کے سامنے بیٹھے ملزم شنبھولال کے ساتھ ایک کم سن لڑکی بھی ہے اوروہ لوجہاد اوراسلامک جہادکے خلاف بھاشن دے رہے ہیں۔
ملزم لاش کووہیں چھوڑکرفرارہوگئے ،جس سے کتوں نے لاش کونوچناشروع کردیا۔راجسمندپولس تفتیش کرہی رہی تھی کہ سوشل سائٹس پراچانک سے یہ ویڈیووائرل ہوا ۔ویڈیومیں قتل کے ملزم شنبھولال لوجہاد کاذکرتے ہوئے دوسروں کومتنبہ کررہاتھاکہ لوجہادکرنے والوں کا یہی حشرہوگا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *