انسان کی کامیابی کا راز اللہ کی صحیح معرفت حاصل کرنا ہے:مولانا وسیم احمد مدنی

دنیا میں ہر انسان کااپنے اپنے لحاظ سے کامیابی وکامرانی کا مختلف پیمانہ ہے۔ایک ڈاکٹر، ایک کسان، ایک تاجر اور ایک طالب علم کا اپنے اپنے پیشے کے لحاظ سے کامیابی کا خاص تصور ہے۔مگر رب کائنات کے نزدیک حقیقی کامیاب کون ہے؟ اس کی وضاحت ایک ایسی سورت میں کی گئی ہے جس کا پڑھنا ہرجمعہ اور عیدین میں مسنون ہے۔اس میں بتایا گیا ہے کہ کامیاب وکامراں انسان وہ ہے جو اپنے آپ کو باطل افکار وخیالات ، غلط عقائد ونظریات سے محفوظ کرے اور جاہلی عادات واطوار اور فاسد اخلاق وکردار سے اپنے آپ کو پاک وصاف کرلے،نفسانی خواہشات اور دنیا طلبی نے اس پر جو پردہ ڈال دیا ہے اسے زائل کرے تاکہ وہ اپنی اور دنیا کی حقیقت کو سمجھ سکے اور اللہ کی صحیح معرفت حاصل کرسکے۔اسی کو تزکیۂ نفس سے تعبیر کیا گیا ہے۔
ان خیالات کا اظہار ابوالکلام آزاد اسلامک اویکننگ سنٹر،نئی دہلی کے اعلی تعلیمی وتربیتی ادارہ جامعہ اسلامیہ سنابل کے سینئر استاذ جناب مولانا وسیم احمد سنابلی مدنی نے سنٹر کی جامع مسجد ابوبکر صدیق، جوگابائی میں 3نومبرکوخطبہ جمعہ کے دوران کیا۔
خطیب موصوف نے مزید فرمایا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم بھی تزکیہ نفس پر بہت زور دیا کرتے تھے اور اپنی دعاؤں میں اس کا التزام بھی کرتے تھے۔رب کائنات نے آپ کی بعثت کا مقصد بھی تزکیہ نفس کو قرار دیا ہے۔اس کے بعد دوسری چیزجسے کامیابی کی اساس قرار دیا گیا ہے وہ ذکر الہی اور صلوات کی پابندی ہے یعنی بندہ اللہ کی یاد سے اپنی زبان تر رکھے اور اپنی تمام مشغولیتوں میں اللہ سے غافل نہ ہو، صلوات خمسہ جو اسلام کا رکن عظیم ہے، جس پر اسلام کی عمارت کھڑی ہے اور جس کی بابت بندہ سے بروز قیامت سب سے پہلے سوال کیا جائے گا، اور جو کسی بھی حالت میں معاف نہیں ہے ۔ سردی ،گرمی، برسات، طوفان، بود وباراں، تیز وتند ہوائیں،جنگ وصلح کسی بھی حالت میں معاف نہیں۔اس لئے بندے کی کامیابی کے لئے ضروری ہے کہ صلوات خمسہ باجماعت کی پابندی کرے اور آخرت کی زندگی جو دائمی اور ابدی زندگی ہے اس کی فکر کرے۔دنیا اور اس کی رونقوں سے اپنے آپ کوبچا کر آخرت کی کامیابی کے لئے تیار کرے۔اخیر میں دعائیہ کلمات پر خطبہ ختم ہوا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *