مقتول عمرخان کے اعزاء واقارب دہلی میں پریس سے روبروہوئے

umar-khan's-uncle
الورمیں راجستھان پولیس نے مقتول عمرخاں کے ساتھ دودھ کیلئے گائے لیکر واپس آرہے دولوگوں کو20نومبرکوگرفتارکرلیاہے۔حکام کے مطابق دونوں کوگائے کی اسمگلنگ کے الزام میں گرفتارکیاگیاہے۔وہیں گرفتارہوئے لوگوں کے خاندان اورمظاہرین نے پولیس کے اوپرقاتلوں کاساتھ دینے کاالزام لگایاہے۔طاہرخان اورجاویدخان پرالزام ہے کہ 10نومبرکوجس وقت گؤرکشکوں نے حملہ کیاتھااس وقت وہ دونوں ہی عمرخاں کے ساتھ پک اپ ٹرک میں گایوں کولے جارہے تھے۔عمرکی موت جائے حادثہ پرہی ہوگئی تھی اوراس کی مسخ لاش رام گڑھ علاقے کے قریب ریلوے ٹریک پرملی تھی۔
کل پریس کلب آف انڈیامیں منعقدایک خصوصی پریس کانفرنس میں عمرخاں کے اعزاء واقارب نے تفصیلات پیش کیں۔مقتول عمرکے چچاعبدالرزاق ودیگرنے بتایاکہ اب تک ریاستی حکومت کاکوئی ذمہ دارنہ توہمدردی کا اظہارکرنے انکے گھرآیاہے اورنہ ہی کسی گرانٹ کاہنوزاعلان کیاہے۔عیاں رہے کہ پوسٹ مارٹم کے بعدعمرخاں کی مسخ لاش ساتویں روزان کے گاؤں میں ہزاروں لوگوں کی موجودگی میں دفنایاگیا۔
عیاں رہے کہ گائے کے تحفظ کے نام پرلنچنگ کے واقعات پی ایم مودی کی کئی بارتنبیہ کے بعدکسی نہ کسی اندازمیں جار ی ہے اورلنچنگ کے ذمہ داران زیادہ ترآزادگھوم رہے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *