اے ایم یوکے طلبا نے ہکیتھین، ڈیجیٹل مصالحہ چیلنج میں اول انعام حاصل کیا

amu-students
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی( اے ایم یو) کے ذاکر حسین انجینئرنگ کالج کے تین طلبہ کی ایک جماعت نے ممبئی میں فیس بُک انڈیا کے تعاون سے ویب پورٹل یوتھ کی آواز کے زیرِ اہتمام منعقدہ ہکیتھین، ڈجیٹل مصالحہ چیلنج میں حصہ لے کر اول انعام حاصل کیا ہے۔ مذکورہ ٹیم میں سال آخر انجینئرنگ کے طالب علم حمزہ خاں، ارشد شاہد اور باقر خاں شامل ہیں۔مذکورہ کمپیوٹر ایپ انٹرنیٹ پر دستیاب مطالعاتی مواد کا جائزہ لے کر قاری کو یہ بتائے گا کہ کون سا مطالعاتی مواد حقائق پر مبنی ہے اور کس مواد میں حقائق کو توڑ مروڑ کر قارئین کو گمراہ کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ٹیم کے رکن حمزہ خاں نے بتایا کہ انٹر نیٹ پر مبنی مختلف سوشل سائٹوں پر انتہا پسندانہ مواد پیش کیا جا رہا ہے جس سے سماجی منافرت کو فروغ حاصل ہوتا ہے اور مختلف طبقات کے درمیان عدم رواداری پیدا ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ایپ کے استعمال سے ایسے مواد کو نشان زد کیا جا سکے گا اور اس پر روک بھی لگائی جا سکے گی۔
ٹیم کے دیگر رکن باقر خاں نے کہا کہ ان کی محنت وصول ہوئی اور وہ اس ایپ پر مزید دلچسپی کے ساتھ کام کریں گے۔ اشر شاہد نے بتایا کہ ان کی ٹیم عالمی شہرت یافتہ مورخین، ماہرینِ سماجیات، صحافیوں اور دانشوروں کی مدد حاصل کرکے ایپ کے لئے مصنوعی انٹیلیجنس فروغ دے گی تاکہ انتہا پسندانہ اور گمراہ کن مواد کا صحیح صحیح جائزہ لے کر اسے نشان زد کیا جا سکے۔اے ایم یو کی جماعت کے اس حاصل کو جس کے تحت اسے پانچ ہزار امریکی ڈالر کے انعام سے سرفراز کیا گیا ہے، فیس بک انڈیا کے پبلک پالیسی ڈائرکٹر وشو ناتھ ٹھکرال نے ایک اہم قدم بتاتے ہوئے کہا کہ اس سے انٹر نیٹ کے قارئین پر مثبت اثر پڑے گا۔ ہکیتھین ججیز کی جیوری میں انسٹیٹیوٹ آف پیس اینڈ کنفلکٹ اسٹڈیز کی ڈائرکٹر روحی نیوگ، اشوک فیلو اور سینٹر فار ڈائیلاگ اینڈ ری کنسی لی ایشن کی پروگرام ڈائرکٹر محترمہ سشوبھا باروے اور فیس بک انڈیا اور ساؤتھ ایشیا کے پبلک پالیسی ڈائرکٹر مسٹر شو ناتھ ٹھکرال شامل تھے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *