سنگاپور میں اے ایم یو کے ابنائے قدیم نے سرسید احمد خاں کا جشن پیدائش منایا

AMU-Alumni
سنگاپور میں مقیم علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ابنائے قدیم نے چانگی سول سروس کلب میں سرسید احمد خاں کا دو سو سالہ جشن پیدائش منایا۔ سنگاپور میں ہندوستان کے سفیر جاوید اشرف تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔ انھوں نے اپنی تقریر میں سرسید احمد خاں کو عظیم مصلح اور ماہر تعلیم قرار دیتے ہوئے کہا کہ مغلیہ ہندوستان میں ان کی پیدائش ہوئی، برطانوی ہندوستا ن میں ان کی وفات ہوئی مگر انھوں نے ایسی وراثت چھوڑی جو جدید ہندوستان میں اپنا نام روشن کئے ہوئے ہے۔ جاوید اشرف نے سرسید کی عقلیت پسندی اور وسیع المشربی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مسلم شناخت کی جو توضیح انھوں نے کی ، آج کے دور میں جب مذہبی تنگ نظری اور انتہاپسندی سے سماج کو خطرات لاحق ہیں، اُس کی شدید ضرورت ہے۔ انھوں نے کہاکہ سرسید کی دوراندیشی بے مثال ہے، برصغیر میں ایسے دانشوروں کی آج ضرورت ہے جو سرسید کی فکر کو عمل میں لاسکیں ۔
جی اے گروپ کے ایم ڈی اور چیئرمین جارج ابراہم نے اے ایم یو میں اپنی طالب علمی کے دور کو یاد کرتے ہوئے جذباتی انداز میں کہاکہ تواضع، وسیع المشربی اور وعدوں کا پاس رکھنا انھوں نے اپنے مادرِعلمی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے سیکھا۔ مسٹر جارج ابراہم نے سن 1960کی دہائی میں اے ایم یو سے پولیٹیکل سائنس میں پی جی کیا تھا۔ پروگرام کے دوران سرسید احمد خاں کی زندگی پر مبنی ایک دستاویزی فلم دکھائی گئی۔ اس کے علاوہ یونیورسٹی پر مبنی انٹرایکٹیو کوئز کا انعقاد کیا گیااور شام غزل کا بھی اہتمام کیا گیا۔ پروگرام کا اختتام یونیورسٹی ترانہ پر ہوا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *