ماں نے بیٹی سے رچائی شادی،10سال کی سزا

american-woman-married
امریکہ کے درمیانی مغربی حصہ کے اوکلاہوم علاقے میں پولس نے ایک خاتون کواپنی بیٹی کے ساتھ شادی کرنے کے معاملے قصوروارپایاہے۔ ’پنجاب کیسری‘کے مطابق ،چائلڈویلفیئرانویسٹی گیشن کے دوران پچھلے مہینے پولیس کوپتہ چلاتھاکہ پیٹریسیااین سپان (43)اوران کی بیٹی مسٹی نے آپس میں مارچ کے مہینے میں شادی کرلی تھی۔جانچ کے دوان پولس کوپتہ چلاکہ پیٹریسیانے سال 2008میں اپنے بیٹے سی بھی شادی کی تھی،جس نے شادی کے 15مہینے کے بعدشادی کوردکرنے کیلئے درخواست دیاتھا۔
فی الحال اس شادی کی پیچھے کے وجوہات کاپتہ نہیں چل پایاہے۔رپورٹ کے مطابق،پیٹریسیااوراس کی بیٹی مسٹی کوگزشتہ بدھ کواسٹیفنس کاؤنٹی ضلع کورٹ میں پیش کیاگیاتھا۔واضح ہے کہ اوکلاہوماکے قانون کے مطابق دوقریبی رشتہ داروں کی شادیوں کوغلط رواج ماناجاتاہے،جہاں پرکسی بھی قسم کے جسمانی رشتے کاکوئی وجودہی نہیں ہے۔مسٹی نے اپنی ماں کے خلاف دھوکے سے شادی کرنے کامعاملہ درج کرایاتھا۔مسٹی کی شادی کے مطابق، پیٹریسیانے اس سے کہاتھاکہ اس نے تین وکیلوں سے بات کی اوران کا کہناتھاکہ ان دونو ں کی شادی میں کوئی دقت نہیں آئے گی۔
وہیں معاملے کی سنوائی کے دوران کورٹ نے پایاپیٹریسیانے دھوکے سے اپنی بیٹی کواس سے شادی کرنے کیلئے مجبورکیاتھا۔اس معاملے کوسنجیدگی سے لیتے ہوئے کورٹ نے غلط رواج کاقصوروارمانتے ہوئے پیٹریسیاکو10سال کی سزاسنائی اورمسٹی کے خلاف معاملہ ردکردیاگیا۔
چائلڈسروس انویسٹی گیشن سے بات چیت کے دوران پیٹریسیانے بتایاکہ وہ اپنے تینوں بچوں کی کسٹڈی کھوچکی تھی اوران کے دادا-دادی نے انہیں گودلے لیاتھا۔ایسوسی ایڈٹ پریس کی پورٹ کے مطابق،دوسال پہلے اس کا رابطہ اس کی بیٹی سے ہواتھا۔پیٹریسیانے کہاکہ اس نے سوچاتھاکہ وہ اپنی بیٹی سے شادی کرسکتی ہے کیونکہ اس نام جنم سرٹیفکٹ پرمسٹی سپان نہیں تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *