ایک مرے ہوئے شخص کا اپنی بیٹی کو تحفہ

gift-for-daughter
امریکی ریاست ٹینیسی کے شہر ناکسویل سے تعلق رکھنے والی بیلی سیلرز کو ہر سال سالگرہ کے موقع پر پھولوں کا ایک گلدستہ موصول ہوتا ہے۔ یہ گلدستہ ان کے والد کی طرف سے بھیجا جاتا ہے جو کہ پانچ سال پہلے کینسر کی وجہ سے مرچکے ہیں۔دراصل انہوں نے مرنے سے پہلے ایک پھول والے کو پیشگی ادائیگی کرکے ہدایت دی تھی کہ ہر سال ان کی بیٹی کو سالگرہ کے موقع پر پھولوں کا گلدستہ بھیجاکرے۔جس وقت ان کے والد کا انتقال ہوا،اس وقت سیلرز کی عمر 16 سال تھی اور اب وہ 21ویں سالگرہ منارہی ہے۔وہ گزشتہ پانچ برسوں سے پھولوں کا گلدستہ ایک لکھے ہوئے پیغام کے ساتھ موصول کر رہی تھیں۔اس سال یہ پیغام تھا ’میں اب بھی ہر سنگ میل پر تمھارے ساتھ ہوں گا، بس ادھر ادھر دیکھو اور میں وہیں ہوں گا۔ ’جب تک ہم دوبارہ نہیں ملتے یہ میرا تمھیں آخری پیار بھرا خط ہے۔ میری بچی میں نہیں چاہتا کہ تم میرے لیے کوئی آنسو بہاؤ میں بہتر جگہ پر ہوں۔‘
بیلی سیلرز کا کہنا ہے کہ ’میں جانتی ہوں۔ ہر سال میں اپنی سالگرہ میں اس کا انتظار کرتی تھی کیونکہ مجھے محسوس ہوتا تھا کہ وہ ابھی تک یہیں میرے ساتھ ہیں لیکن یہ اخری سال ہے کہ مجھے یہ ملا ہے اس لیے دل سوز ہے۔‘
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *