اردو اکادمی، دہلی کی جانب سے تعلیمی وثقافتی مقابلے کا انعقاد

urdu-acadmey
اردو اکادمی، دہلی دہلی کے اسکولوں کے طلباء و طالبات میں تعلیم کا ذوق و شوق پیدا کرنے اور ان میں مسابقت کا جذبہ پیدا کرنے کے لیے ہر سال تعلیمی مقابلے منعقد کرتی ہے۔ ان مقابلوں میں اول، دوم اور سوم آنے والے طلباء و طالبات کو انعام دیتی ہے اور طلبا و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لیے کنسولیشن انعام بھی دیتی ہے۔ ان مقابلوں میں تقریری ، فی البدیہہ تقریری، بیت بازی ، اردو ڈراما، غزل سرائی، کوئز( سوال و جواب) ، مضمون نویسی و خطوط نویسی مقابلے اور امنگ پینٹنگ مقابلہ شامل ہیں۔ یہ تعلیمی مقابلے دہلی کے پرائمری تا سینئر سیکنڈری اردو اسکولوں کے طلباء و طالبات کے درمیان منعقد ہوتے ہیں۔
9اکتوبرکو اکادمی کے قمررئیس سلور جوبلی آڈیٹوریم میں غزل سرائی کا مقابلہ برائے سینئر سیکنڈری زمرہ منعقد ہوا جس میں بطورجج ڈاکٹر شبانہ نذیر، پروفیسر کوثر مظہری اور جناب معین شاداب نے شرکت کی۔اس مقابلے میں جج صاحبان کے فیصلے کے مطابق جے شری بنت ہیرا لال اور سلمیٰ بنت منیر (گورنمنٹ گرلز سینئر سیکنڈری اسکول، وویک وہار) کو اول انعام کے لیے منتخب کیا گیا۔ دوسرے انعام کے لیے سواتی چوہان بنت جے ایس چوہان ( ہمدرد پبلک اسکول، سنگم وہار)، علینہ زیدی بنت اظہر زیدی ( ڈاکٹر ذاکر حسین میموریل سینئر سیکنڈری اسکول، جعفرآباد) اور محمد یحییٰ ولد محمد ذاکر ( اینگلوعربک سینئر سیکنڈری اسکول، اجمیری گیٹ) کو منتخب کیا گیا۔جب کہ الضیا بنت محمد نفیس ( زینت محل سروودیہ کنیا ودیالیہ، جعفرآباد) کو سوم انعام کے لیے منتخب کیا گیا ۔ اس کے علاوہ حوصلہ افزائی کے لیے محمد شعیب ولد محمد خالق (ہمدرد پبلک اسکول، سنگم وہار) اور سبیلہ بنت محمد احسان ( زینت محل سروودیہ کنیا ودیالیہ، جعفرآباد)منتخب کیا گیا۔مقابلے کے اختتام کے بعد جج صاحبان نے اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے طلبا کے مقابلے میں شرکت کرنے پر خوشی کا اظہار کیا اور اساتذہ کو مشورہ دیا کہ وہ غزلوں کے انتخاب اور الفاظ کی صحیح ڈھنگ سے ادائیگی پر خصوصی توجہ دیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *