نفرت کی سیاست کرنے و الے ملک کے غدار ہیں: مدنی

mahmood-madani
جمعیۃ علماء ہند کے زیر اہتمام 29اکتوبرکواندراگاندھی انڈور اسٹیڈیم نئی دہلی میں امن و یکتا سمیلن منعقد ہوا ، جس میں ہند و، مسلم ، سکھ اور عیسائی سمیت سبھی مذاہب کے اہم رہنماؤں نے شرکت کی۔اس موقع پر ایک مشترکہ اعلامیہ پڑھا گیا ، جس کے بعد اسٹیڈیم میں موجو د سبھی لوگوں نے ہاتھ اٹھا کر عہد کیا کہ وہ امن ومحبت کے فروغ کے لیے ہر ممکن جد وجہد کریں گے۔واضح ہو کہ اعلامیہ میں عہد کیا گیا ہے کہ جہاں کہیں بھی تشدد ، نفرت ، انتہا پسندی اور تفریق پائیں گے ، اس کو روکنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں گے۔ اعلامیہ میں اس بات پرزورد یا گیا کہ معصوم بچوں،عورتوں اور مردوں پر کسی بھی قسم کا تشدد عملاً یا قولاً،ہندستانیت، انسانیت اور اسلام کے منافی ہے۔اس سمیلن میں جہاں دارالعلوم دیوبند، ندوۃ العلماء ، اجمیر شریف، گلبرگہ شریف اور سرہند شریف کی اہم شخصیات شریک ہوئیں ، وہیں مشہور ہندو رہنماء سوامی چیدانندسرسوتی،جتھیدار اکال تخت،امرتسرکے سربراہ سنگھ صاحب گیانی گروبچن سنگھ جی،سوامی مترانند جی،اچاریہ لوکیش منی،سدگروبرہمیشاننداچاریہ سوامی جی،بدھشٹ رہنما ڈریکنگ کیابگوں چیٹسانگ رینپوچے جی وغیرہ بھی شریک ہوئے۔اس سمیلن میں جمعیۃ علما ء ہند کے جشن صدسالہ کے لیے لوگو بھی لانچ کیا گیا۔
اس موقع پر صدارتی خطاب میں جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا قاری سید محمد عثمان منصورپوری نے کہا کہ فرقہ پرستی اس ملک کی ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ لہذا جمعےۃ علماء ہند تین سطح پر اپنی بات رکھنا چاہتی ہے۔مولانا سید ارشد مدنی صدر جمعےۃ علماء ہند نے کہا کہ ہم یہ ببانگ دہل کہتے ہیں کہ نفرت کی سیاست کرنے و الے ملک کے غدار ہیں ، اگر ملک چل سکتا ہے تو صرف پیار ومحبت سے چل سکتا ہے ورنہ ملک تباہ و برباد ہو جائے گا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *