ریٹائرڈ ہندوستانی فوجی افسرکوثابت کرناپڑرہاہے اپنی شہریت

Retired-Army-Officer-Mohd-A
ایک ہندوستانی فوجی جو فوج میں 30 سال خدمات انجام دینے کے بعد ریٹائرڈ ہوچکا ہے اب اس کو اپنی ہندوستانی شہریت ثابت کرنے لیے کا کہا گیا ہے۔مشرقی ریاست آسام میں حکام نے محمد اجمل پر بنگلہ دیش کے غیرقانونی تارک وطن کا الزام عائد کیا ہے۔بی بی سی کے مطابق انھیں چند ہفتوں میں فارنرز ٹریبیونل کے سامنے پیش ہونے کا حکم نامہ بھی جاری کیا گیا ہے۔
محمداجمل کے خلاف مقامی پولیس نے ایک کیس درج کیاہے، جس میں ان کے خلاف غیرقانونی طریقے سے ہندوستان میں رہنے کاالزام لگایاہے اورانہیں بنگلہ دیش کا شہری بتایاگیاہے۔ساتھ ہی ساتھ ان کانام مشتبہ ووٹروں کی فہرست میں بھی ڈال دیاگیاہے اورانہیں سبھی دستاویزات جمع کرکے ہندوستانی شہریت ثابت کرنے کیلئے کہاگیاہے۔خیال رہے کہ تین سال قبل ان کی اہلیہ کے خلاف بھی ایسے ہی الزامات لگاکرنوٹس بھیجاگیاتھاتاہم جانچ میں سبھی الزامات بے بنیادپائے گئے تھے۔خیال رہے کہ بی جے پی کی حکومت والی ریاست آسام میں حالیہ دنوں میں فارنرز ٹویبیونلز میں اضافہ دیکھا گیا ہے کیونکہ غیرقانونی تارکین وطن کا معاملہ بی جے پی کا اہم انتخابی موضوع ہے۔انڈین اخبار ہندوستان ٹائمز کے مطابق اجمل کو جاری کیے گئے نوٹس کے مطابق ضلعی پولیس نے ان کے خلاف 25 مارچ 1971 کو آسام میں متعلقہ ضروری دستاویز کے بغیر آسام میں داخل ہونے کا مقدمہ درج کیا ہے، اسی رات پاکستان آرمی نے اس وقت کے مشرقی پاکستان میں آپریشن سرچ لائٹ کا آغاز کیا تھا۔محمداجمل اپنے اوپر عائد الزامات کی تردید کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ جب کوئی فوج میں شمولیت اختیار کرتا ہے تو پولیس کی جانب سے تصدیق لازمی ہوتی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *