نوازشریف اورانکے کنبیپربدعنوانی معاملہ میں الزام طے

nawaz-sharif
پاکستان کی بدعنوانی مخالف عدالت نے پاکستان کے بے دخل وزیراعظم نوازشریف کی بیٹی مریم اوران کے داماد ریٹائرڈ کیپٹن محمدصفدرپرالزم طے کئے ہیں ان تینوں پرعدالت نے لندن میں فلیٹس کے ایک معاملے میں الزام طے کئے ہیں،یہ الزام 19اکتوبرکوہوئی سنوائی کے دوران طے کئے گئے۔پاکستان کے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف پر اسلام آباد کی احتساب عدالت نے آف شور کمپنیوں سے متعلق ‘فلیگ شپ انویسٹمینٹ’ ریفرنس میں فرد جرم عائد کر دی ہے تاہم انھوں نے صحت جرم سے انکار کیا ہے۔
سابق وزیراعظم جو کہ ملک میں حکمراں جماعت مسلم لیگ ن کے صدر بھی ہیں اس وقت اپنی اہلیہ کلثوم نواز کی علالت کی وجہ سے لندن میں مقیم ہیں۔بی بی سی کے مطابق جمعرات کی طرح آج جمعہ کو بھی ان پر فرد جرم ان کی غیر موجودگی میں ہی عائد کی گئی۔اس موقع پر ان کی بیٹی، داماد اور ان کی جانب سے موجود ان کے وکیل ظافر خان نے صحت جرم سے انکار کیا۔نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق جمعہ کو پیش کی جانے والی چار شیٹ میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کے بیٹے حسن اور حسین نواز سنہ 1989 سے لے کر 1999 تک والد کے زیر کفالت تھے جبکہ حسن نواز نے 90 سے 99 تک کے اثاثوں کی تفصیلات دی ہیں۔اس چارج شیٹ میں آف شور کمپنیوں کا ذکر بھی ہے اور نواز شریف ملک عوامی عہدہ رکھنے کے باوجود سنہ 2007 سے 2014 تک اس کے چیئرمین رہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *