بریسٹ کینسرسے بچنے کیلئے ماہرین کے مشورے

breast-cancer
دودھ نہ پلانے والی ماؤں میں کینسر کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔بچوں کو دودھ نہ پلانے سے ماؤں میں کینسر پھیلنے کی شرح بڑھ رہی ہے۔پیدائش کے بعد بچے کو دودھ نہ پلانے سے ماں کے کینسر میں مبتلا ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ماہرین امراض کاکہناہے کہ ماں کے دودھ کا کوئی متبادل نہیں، بچوں کو دودھ نہ پلانے سے ماؤں میں کینسر پھیلنے کی شرح بڑھ رہی ہے۔ ماؤں کو بچے کی پیدائش کے فوراً بعد ڈبے کے دودھ کی ترغیب دینا دھوکہ دہی ہے، بچے کی پیدائش کے فوراً بعد دودھ نہ پلانے سے ماں کے جسم میں تبدیلیاں آتی ہیں جو کینسر کا باعث بنتی ہیں۔تمام خواتین میں چھاتیوں کاکینسرہوجانے کاکچھ خطرہ موجودہوتاہے اورجوں جوں خواتین کی عمربڑھتی ہے یہ خطرہ بڑھ جاتاہے۔چھاتیوں کے کینسرکیلئے معائنہ کرواناایک ذاتی فیصلہ ہے۔آپ اس بات کامعلومات کی بنیادپرفیصلہ کرنے کیاصحیح ہے۔
اسکریننگ کامقصدجتناجلدی ممکن ہوچھاتی کے کینسرکے بارے میں اس سے پہلے کہ کوئی خاتون علامات محسوس کرے جیسے جانناہے کہ چھاتی میں درد،گلٹی محسوس کرنایاچھاتی میں دوسری تبدیلیا۔اکثرصورتوں میں، جب سکریننگ کے ذریعہ چھاتی کے کینسرکاپہلے سے پتہ لگ جاتاہے توآپ کے پاس علاج کے زیادہ مواقع ہوتے ہیں اوربیماری سے بچنے کا بہترموقع ہوتاہے۔اکثرخواتین کی چھاتی کے کینسرکی سکریننگ میموگرام کے ذریعہ ہوتی ہے۔یہ محفوظ درجے پرکم مقدارکاایکسرے ہوتاہے تاکہ چھاتیوں کے اندرکی تصویرلی جائے۔میموگرام کے دوران بے آرامی ہوسکتی ہے لیکن دردکبھی بھی نہیں ہوناچاہئے۔میموگرام کیلئے بہترین احتیاط اوراعلیٰ معیاری اسکریننگ اونٹاریوبریسٹ پروگرام اسکریننگ یاکسی ایسے کلینک میں جائیں جوکنیڈین ایسوسی ایشن آف ریڈیالوجسٹ سے منظورشدہ ہو۔پروگرام اسکریننگ بریسٹ اونٹریو(اوبی ایس پی)اسکریننگ کی تمام ٹیکنالوجسٹ خواتین ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *