اردو اکادمی کے29ویں ڈراما فیسٹول میں’شیشے کے کھلونے‘ اسٹیج کیا گیا

darama-festival
اردو اکادمی ،دہلی کے زیر اہتمام منعقد 29واں سالانہ اردو ڈراما فیسٹول جاری ہے ۔فیسٹول کی تیسری شام ڈراما ’ شیشے کے کھلونے ‘ اسٹیج کیا گیا ۔اس ڈرامے کو دی ڈرامیٹک آرٹ اینڈڈیزائن ایسوسی ایشن نے پیش کیا ۔اسے ڈرامے کا روپ بلقیس ظفیرالحسن نے دیا ۔یہ ڈراما سماج اور معاشرے میں پھیلی منفی نفسیات پر چوٹ کرتا ہے ۔در اصل ڈرامے میں سماج کے ایسے کرداروں کو پیش کیا گیا ہے ،جو نامساعد حالات کو برداشت نہ کرکے نفسیاتی مریض ہوجاتے ہیں اور اتنے ناسٹیلجک ہوجاتے ہیں کہ ان کے سامنے دنیا اور خود ان کی حقیقت کھل نہیں پاتی اور وہ اپنی بنائی ہوئی جنت میں زندگی گزارتے ہیں ۔
آج ہمارے معاشرے میں کسی انسان کا غائب ہوجانا یا کسی عورت کا بیوہ ہوجانا عام بات ہے ایسے میں انہیں کس طرح زندگی کرنے کی قوت پیداکرنی چاہیے ،اس پر توجہ مرکوز کی گئی ہے ،ایسے میں کسی خاتون کا اپنے بچوں کے ساتھ رویہ کیسا ہوجاتا ہے اورکیساہوناچاہئے اس پر خاصی روشنی ڈالی گئی ہے تاکہ بچے بے راہ یا باغی نہ ہونے پائیں ۔
یہ ڈراماگزشتہ دودنوں میں پیش کیے جانے والے ڈراموں کی بہ نسبت نئی دنیا کو پیش کرتا ہے اور نئے مسائل سے روبرو کراتا ہے ۔اس میں شادی بیاہ کے مسائل اور نوجوانوں کی تبدیل ہوتی زندگی بھی زیر بحث آئی ہے ۔ڈرامے کے کاسٹیومزحالات کے مطابق تھے ۔ڈرامے کی کہانی کو آگے بڑھانے کے لیے ایک راوی کا بھی سہارا لیاگیا تھا ۔ڈراما فلیش بیک میں چلتا ہے۔ کرداروں نے ڈرامے کو پیش کرنے میں حساسیت کا مظاہرہ کیا ۔دی ڈرامیٹک آرٹ اینڈ ڈیزائن ایسوسی ایشن کی جانب سے پیش کیے گئے اس ڈرامے ’شیشے کے کھلونے ‘کے اختتام پر ہدایت کارگووند سنگھ یادو نے فن کاروں کا تعارف کرایااور اردو اکادمی کے اراکین وذمہ داروں نے اسکرپٹ رائٹر اور ڈائرکٹر کو گلدستے پیش کیے ۔ڈرامہ فیسٹول کی تیسری شام بھی حسب روایت سابق ہال ناظرین سے بھرا ہواتھا ۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *