سعودی عرب کو’تھاڈ‘میزائل خریدنے کی اجازت

thaad-missile
امریکی وزارت خارجہ محکمہ نے سعودی عرب کوٹرنمل ہائی آلٹیڈیوڈایریاڈیفنس(THAAD)میزائلیں خریدنے کی منظوری دے دی ہے۔یہ ڈیل 6اکتوبرکوہواہے اوربتایاجارہاہے کہ ان میزائلوں کی قیمت 15ارب ڈالر(تقریباً 98ہزارکروڑروپے)ہے ۔’پینٹاگون‘ کے مطابق سعودی عرب جیسے دوست ملک کو ’تھاڈ‘ میزائل سسٹم کی فروخت امریکا کی قومی سلامتی کی معاونت اور خارجہ پالیسی کے مفادات کا تحفظ کرسکے گی۔ سعودی عرب اور خلیجی خطے کے دوسرے ممالک کی طویل المدت امن وسلامتی اور انہیں ایران کی طرف سے لاحق خطرات کی روک تھام کے لیے ریاض کو ایسے جدید ترین میزائل نظام کی فراہمی اہمیت کی حامل ہے۔خبروں کے مطابق سعودی عرب نے 44تھاڈلانچر،360میزائلیں، 16فائرکنٹرول اسٹیشن اور7رائڈرخریدنے کا فیصلہ کیاتھا۔عیاں رہے کہ مڈل ایسٹ میں ایران کے پاس بلیسٹک میزائلوں کا سب سے بڑاذخیرہ ہے، اورتھاڈمیزائل سسٹم ان سے نپٹنے میں اہل ہوتے ہیں۔ خیال رہے کہ ’تھاڈ‘ میزائل شکن سسٹم کا شمار امریکا کے جدید ترین دفاعی نظاموں میں ہوتا ہے۔ جدید ترین راڈاروں سے لیس اس سسٹم میں کئی میزائل بیٹریاں نصب کی جا سکتی ہیں۔ یہ سسٹم بلند ترین مقام پر بھی بیلسٹک میزائلوں کے حملوں سے بچاؤ میں معاون ثابت ہو گا۔ امریکا نے ’تھاڈ‘ میزائل شکن سسٹم رواں سال جنوبی کوریا میں شمالی کوریا کے حملوں سے بچاؤ کے لیے نصب کیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *