پہلو خان لنچنگ کے پانچویں ملزم کو بھی ضمانت ملی

راجستھان ہائی کورٹ نے یکم اپریل کوبہرور (راجستھان) کے پاس اپنے گاؤں جے سنگھ پورا (نوح، ہریانہ ) جاتے ہوئے لنچنگ کے سانحہ میں ہلاک ہوئے 55 سالہ پہلو خاں کے معاملے میں سات گرفتار شدگان میں سے مزید ایک کو ضمانت پر بری کردیا ہے۔ یکم ستمبر کو ضمانت پر بری کئے گئے 19 سالہ وپن یادو اس کیس میں7 افراد میں ضمانت پانے والے پانچویں فرد ہیں۔ اب صرف دو ہ ملزمین پابند سلاسل ہیں۔

 

 

 

عیاں رہے کہ متنازع فیہ ہندوتو رہنما سادھوی کمل دیدی نے گزشتہ مئی میںمذکورہ ملزم وپن یادو کا موازنہ تحریک آزادی کے مجاہدین بھگت سنگھ اور چندر شیکھر آزاد سے کرتے ہوئے اس کی تعریف بھی کی تھی۔
قابل ذکر ہے کہ ویسے ایف آئی آر میں درج 6 افرد میں سے اب تک کوئی شخص بھی لنچنگ کے اس معاملے میں گرفتار نہیں کیا جاسکا ہے۔ دریں اثناء راجستھان پولیس نے اس کیس میں تفتیشی افسر (آئی او) کو متعدد بار بدلا ہے اور فی الحال یہ کیس کریمنل انویسٹی گیشن ڈپارٹمنٹ ، کرائم برانچ (سی بی سی آئی ڈی) کے ذریعہ تفتیش کیا جا رہا ہے ۔ ابتدا میں اپریل میں گرفتار شدہ سات افراد کے اب تک کوئی گرفتاری اس معاملے میںنہیں ہوئی ہے۔ معاملہ بہت سست رفتاری سے چل رہا ہے۔ پہلو خان کے بیٹے ارشاد کا کہنا ہے کہ ’’ہماری جدو جہد جاری رہے گی اور ہم آخر وقت تک قانونی لڑائی لڑتے رہیں گے۔‘‘

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *