’فنّے خاں‘ فلم کا ہے اب سب کو انتظار

شائقین فلم کے لیے خوش خبری یہ ہے کہ راکیش اوم پرکاش مہرہ نے اپنی اگلی فلم ’فنّے خاں‘ کی شروعات کر دی ہے۔ جس میںایشوریہ رائے بچن ، انل کپور، راج کمار راؤ اور نیوکمر پیہو اہم رول میں ہیں۔ اس فلم میں ایشوریہ ایک مشہور سنگر کا رول نبھا رہی ہیں۔ حال ہی میں ایک انٹرویو میںمہرہ نے بتایا کہ اس فلم کی تحریک انھیںآخر کہاںسے ملی؟
اصل میںمہرہ نے سال 2000 میںآسکر کے لیے نامنیٹ ہوئی ڈچ فلم ’ایوری بڈیز فیمس‘ دیکھی تھی اور اس فلم کی کہانی انھیںبے حد پسند آئی تھی۔ یہ کہانی 17 سال کی ایک ایسی لڑکی کے ارد گرد گھومتی ہے جو ہر سنگنگ کانٹیسٹ یعنی گانے کے مقابلے میںحصہ تو لیتی ہے لیکن کبھی جیت نہیںپاتی ہے۔ ایسے میں اپنی بیٹی کو کامیاب بنانے کے لیے بے چین اس کے والد اپنے ملک کی ایک ٹاپ سنگر کو اغوا کرلیتے ہیں،جس کی وجہ سے اس سنگر کے لیٹسٹ میوزک سنگل کی سیل بہت بڑھ جاتی ہے اور یہ دیکھ کر اس کا منیجر بے حد خوش ہو جا تا ہے۔ وہ لڑکی کے والد کے ساتھ ڈیل کرتا ہے کہ اگر وہ اس سنگر کو اپنے پاس چھپاکر رکھے گا تو اس کی بیٹی کو اسٹار بنا دے گا۔
مہرہ کا ماننا تھاکہ اس فلم کی کہانی اڈاپٹ کرکے اس پر ایک بہترین بالی ووڈ فلم بنائی جاسکتی ہے۔ تبھی سے وہ اس کی کہانی کے رائٹس خریدنے میںلگ گئے تھے۔ چونکہ اس فلم کی کہانی اس کے پروڈیوسر ، ڈائریکٹر ڈامنک کے دل کے بھی بے حد قریب تھی، اس لیے انھیںاس کے لیے منانے اور بھروسہ دلانے میںبھی کافی وقت لگا۔ اس کے بعد راکیش اور ڈامنک نے مل کر اس کی کہانی کو ڈیولپ کرنا شروع کیا۔

 

 

 

 

راکیش کے مطابق اس فلم کی ڈائریکشن کی خواہش تو ان کے دل میںشروع سے تھی مگر وہ اور ان کے پروڈیوسر پارٹنر راجیو ٹنڈن چاہتے تھے کہ اس کی کہانی کو تازہ روپ دینے کے لیے کوئی نیا مصنف اسے لکھے اور یہ تلاش اتل منجریکر پر جاکر ختم ہوئی، جو’ رنگ دے بسنتی‘کے وقت سے مہرہ کے ساتھ بطور اسسٹنٹ ڈائریکٹر کام کر رہے تھے۔
راکیش کے مطابق ’اتل نے اس فلم کو بہترین طریقے سے اڈاپٹ کرکے ایک شاندار اسکرپٹ لکھی ہے۔ اس فلم کے ذریعہ انل کپور اور ایشوریہ رائے کو بھی کئی سال بعد ایک بار پھر ساتھ کام کرنے کا موقع مل رہا ہے۔ چونکہ یہ فلم باپ بیٹی کے رشتوں پر مبنی ہے، اس لیے باپ کے کردار کے لیے انل کا نام ہی میرے ذہن میںسب سے پہلے آیا۔ ان کی بیٹی کے کردار میں18 سال کی پیہو کو سلیکٹ کرنے کے لیے کئی لڑکیوںکے آڈیشن لیے گئے اور 5-6 مہینے بعد پیہو پر جاکر یہ تلاش ختم ہوئی۔
جہاں تک ایشوریہ رائے کا سوال ہے تو بین الاقوامی سطح پر فیمس سنگر کے رول کے لیے ان سے بہتر اور کون ہو سکتا تھا؟ اس معاملے میںایشوریہ ہی میری پہلی اور آخری چوائس تھیں۔ ایشوریہ کے اپوزٹ لیڈہیرو کے لیے پہلے آر مادھون کا نام سامنے آیا تھا مگر پھر بعد میںراج کمار راؤ کو لیا گیا۔مہرہ نے اس کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ ہماری پہلی چوائس راج کما رہی تھے لیکن وہ فلم ’بوس‘کی شوٹنگ میں مصروف تھے،اس لیے ہم نے مادھون سے بات کی۔ وہ فلم میںکام تو کرنا چاہتے تھے لیکن ان کے ساتھ ڈیٹس یعنی تاریخ ورک آؤٹ نہیںہو پارہی تھیں۔ اس کی وجہ سے ہمیںشوٹنگ بھی اگست تک ملتوی کرنی پڑی۔ اس بیچ راج کمار فری ہوگئے اور ہمیںاپنی پہلی چوائس مل گئی۔
راکیش کو امید ہے کہ اس فلم کی شوٹنگ اکتوبر تک ختم ہو جائے گی۔ صرف ایک گانے کی شوٹنگ نومبر میںہوگی، جس کے لیے غیر ملکی کوریو گرافرانڈیا آئیںگے ، فلم کو اگلے سال گرمیوںمیںریلیز کرنے کا منصوبہ ہے۔ انھوںنے یہ بھی بتایا کہ میوزک اس فلم کا ایک حصہ ہوگا۔ اس میںانل کپور بھی پہلی بار اپنی آواز میں ارشاد کامل کا لکھا ایک گانا گائیںگے۔ جہاںتک ایشوریہ کے گانے کا سوال ہے تو راکیش نے کہا کہ اس کا فیصلہ انھوںنے فلم کے میوزک ڈائریکٹرز اتل اور امت ترویدی پر چھوڑ دیا ہے۔ امید ہے کہ ’فنے خاں‘ اپنی تیاری کے مرحلے طے کرکے جلدی ہی شائقین کے انٹرٹینمنٹ کا سامان بنے گی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *