شادی کی پلیٹینم جبلی منانے کے بعدمیاں بیوی نے ایک ہی دن دم توڑا

death
کینیڈا کے ایک سابق فوجی اور ان کی برطانوی اہلیہ 75 برس تک ایک ساتھ زندگی گزارنے کے بعد اس دنیا سے ایک ہی دن رخصت ہوئے۔جمعرات کو کینیڈا کے ایک ہسپتال میں ان دونوں کا انتقال ہوا۔ ڈاکٹروں کے مطابق دونوں کے انتقال میں صرف پانچ گھنٹوں کا فرق تھا۔انھوں نے حال ہی میں شادی کی 75 ویں سالگرہ کا جشن منایا تھا۔ اس جوڑے نے دوسری جنگ عظیم کے دوران شادی کی تھی۔ ان کی پہلی ملاقات سنہ 1941 میں لندن کے پاس ایک ڈانس ہال میں ہوئی تھی۔
94 سالہ جین سپیئر کو نمونیا کی وجہ سے ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ ایک دن بعد ان کے 95 سالہ شوہر جارج سپیئر کو بھی ہسپتال میں داخل کرنا پڑا۔ہسپتال کا عملہ جارج سپیئر کو بھی اسی منزل پر منتقل کرنے کی تیاری کر رہا تھا جہاں ان کی بیوی کا علاج چل رہا تھا لیکن ایسا کرنے سے پہلے ہی جین صبح چار بجے چل بسیں۔ اس کے چند گھنٹوں کے بعد ہی ان کے شوہر جارج نے بھی آخری سانس لی۔
اپنی شادی کی 72 ویں سالگرہ کے موقع پر جارج سپیئر نے مقامی اخبار ‘اوٹاوا سٹیزن’ کو اپنی پہلی ملاقات کے متعلق بتایا تھا ‘جینی نے میرے فوجی جوتوں کو دیکھا اور کہا کہ مجھے نہیں لگتا کہ اتنے بڑے اور وزنی جوتوں کے ساتھ آپ رقص کر سکتے ہیں۔’
اس تقریب میں شرکت کے لیے وہ اپنے شوہر جارج کے ساتھ لندن آئیں تھیں۔ محترمہ سپیئر نے جنگ میں متاثر ہونے والے فوجیوں کی بیویوں کے لیے کینیڈا میں پہلا کلب قائم کیا تھا۔چونکہ بہت سی برطانوی خواتین نے کینیڈین فوجیوں سے شادی کر لی تھی اس لیے دوسری عالمی جنگ کے خاتمے کے بعد تقریباً 50 ہزار برطانوی خواتین کینیڈا منتقل ہو گئی تھیں۔سنہ 2011 میں برطانوی شہزادے ویلیم نے شہزادی کیتھرین سے شادی کرنے کے بعد جب کینیڈا کیا دورہ کیا تھا تو ان کے استقبالیے میں اس جوڑے کو بھی ذاتی طور پر مدعو کیا گیا تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *