داعش کے بعد موصل میں دل دہلانے والا منظر

موصل میں فوجی آپریشن کامیاب ہوچکا ہے اور داعش وہاں سے دم دبا کر بھاگ چکا ہے۔ اب عراقی فوج موصل میں داعش کی تباہ کاری کا جائزہ لے رہے ہیں۔اسی جائزے کے دوران عراقی فوج کو کچھ دہل دہلادینے والے مناظر نظر آئے۔
عراق کے شہر موصل میں فوجی آپریشن کے دوران ایک جگہ فوجیوں کو ناہموار زمین نظر آئی۔ کچھ شبہ ہونے پر انہوں نے کھدائی کی تو نیچے سے ایسی چیزبرآمد ہو گئی کہ فوجیوں کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئی۔ زمین کے نیچے ایک اجتماعی قبر تھی جس میں داعش نے سینکڑوں لوگوں کے سرقلم کرکے انہیں ایک ساتھ دفن کر دیا تھا۔ موصل میں یہ اس نوعیت کی دوسری قبر دریافت ہوئی ہے اور ان دونوں قبروں میں مجموعی طور پر 500 لوگوں کی باقیات برآمد ہوئی ہیں۔
ان میں سے ایک قبر میں 470جبکہ دوسری میں 30لوگوں کو اجتماعی طور پر دفن کیا گیا تھا۔رپورٹ کے مطابق یہ باقیات ان لوگوں کی ہیں جنہیں داعش نے قیدی بنایا تھا اور بعدازاں سرقلم کرکے قتل کر دیا۔دونوں قبریں موصل کے شمال مغربی حصے میں واقع بیدوش نامی جیل کے قریب ملی ہیں۔ بیدوش جیل وہ جگہ تھی جہاں داعش قیدیوں کو رکھتی تھی اور انہیں سرقلم کرکے قتل کرتی تھی۔ 10جون 2014کو اس جیل میں 600لوگوں کو قتل کیا گیا تھا

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *