سابق مرکزی وزیر سلطان احمد اب نہیں رہے

سابق مرکزی وزیر مملکت سیاحت اولوبیریا پارلیمانی حلقہ سے ترنمول کانگریس کے رکن پارلیمنٹ اور نائب صدر حج کمیٹی آف انڈیا 64 سالہ سلطان احمد کا آج 4ستمبر کو دل کا دورہ پڑنے سے کولکاتا کے بیلے ویو کلینک ہاسپٹل میں انتقال ہوگیا۔ پسماندگان میں بیوہ ساجدہ احمد اور دو بیٹے ہیں۔
مرحوم سلطان احمد 16مئی 2009 سے 22 ستمبر 2012 تک ڈاکٹر منموہن سنگھ کے دور حکومت میںمرکزی وزیر مملکت رہے۔ 2009 سے اب تک اولو بیریا سے پارلیمانی سیٹ دوبار جیتی ۔ قبل ازیں دسویں اور بارہویں مغربی بنگال ودھان سبھا اسمبلی حلقہ کی نمائندگی کی۔ یہ ترنمول کانگریس کے اقلیتی چہرے کے طور پر مشہور تھے اور مغربی بنگال کی راجدھانی کولکاتا کی ہردلعزیز شخصیت کے طور پر جانے جاتے تھے۔

 

 

 

سلطان احمد کی پیدائش 6 جون 1953 کو کولکاتا میں ہوئی تھی۔ مولانا آزاد کالج کلکتہ یونیورسٹی سے انھوںنے گریجویشن کیا تھااور 1969 میں طالب عملی کے زمانے میں ہی کانگریس کی طلبہ تنظیم چھاتر پریشد سے وابستہ ہوگئے تھے۔ پھر 1973 میں یوتھ کانگریس میں شامل ہوئے اور وہاں نمایاں مقام حاصل کیا۔ 1997 میں قائم ہوئی ترنمول کانگریس کے بانی رکن رہے۔ یہ محمڈن اسپورٹنگ کلب کولکاتا کے پہلے سکریٹری اور پھر بعد میںصدر بھی بنے۔
سلطان احمد آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کی مجلس عاملہ کے رکن بھی تھے۔ ان کی رحلت پر صدر مشاورت نوید حامد نے گہرے غم کا اظہار رکرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحوم کے انتقال سے ملک و ملت ایک مخلص رہنما سے محروم ہوگئی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *