یوم آزادی پر خاص جذبہ آزادی و حب اوطنی کو ابھارتی فلمیں

ایک زمانہ تھا جب فلم انڈسٹری میںحب الوطنی (دیش بھکتی) پر مبنی فلموںکی اچھی خاصی مانگ ہوا کرتی تھی۔ حب الوطنی کی ایسی کئی فلمیںبنی ہیں جو جنگ آزادی کی یاد دلاتی ہیں۔ دلیپ کمار، منوج کمار، جتندر، دھرمندر، سنیل دت، راجکمار وغیرہ ایسے اداکار تھے جو اپنی اداکاری سے ان فلموں میںجان ڈال دیتے تھے۔ ان دنوں دیش بھکتی کے نغموںکی بھی کافی اہمیت تھی۔ وہ گانے آج بھی ملک کی آزادی کے موقع پر یاد کیے جاتے ہیں۔ جن میں’میرارنگ دے بسنتی چولا۔۔، آؤ بچو تمہیں دکھائیں جھانکی ہندوستان کی ۔۔، ہم لائے ہیں طوفان سے کشتی نکال کے۔۔، اے وطن اے وطن ہم کو تیری قسم۔۔۔، میرے دیش کی دھرتی سونا اگلے۔۔۔، یہ دیش ہے ویر جوانوں کا۔۔۔، اپنی آزادی کو ہم ہرگز مٹا سکتے نہیں۔۔۔، اب تمہارے حوالے وطن ساتھیو۔۔۔، جہاں ڈال ڈال پر سونے کی چڑیاں کرتی ہیں بسیرا۔۔۔، اے میرے وطن کے لوگو ذرا یاد کروقربانی۔۔۔، وغیرہ ایسے یادگار نغمے ہیں جو یوم آزادی اور یوم جمہوریت کے موقع پر خوب سنے جاتے ہیں، گائے جاتے ہیں او ریاد کیے جاتے ہیں۔ ان نغموں کو سن کر ہر ہندوستانی فخر محسوس کرتا ہے۔
وقت بدلنے کے ساتھ ساتھ ہماری فلم انڈسٹری بھی بدلتی گئی۔ آج کے دور میںبھلے ہی دیش بھکتی کی فلمیںکم بنائی جاتی ہیں لیکن دیش بھکتی کے نغمے تو بہت ہی کم سننے کو ملتے ہیں۔ آئیے جانتے ہیں ملک کی وہ شاندار فلمیںجو جنگ آزادی کی کہانی بیان کرتی ہیں او ردیش بھکتی کا جذبہ جگاتی ہیں۔
آنند مٹھ: 1952 میں آئی فلم آنند مٹھ بنکم چندر چٹرجی کے ناول پر مبنی تھی۔ یہ فلم سنیاسی انقلابیوں کی آزادی کی لڑائی کی کہانی تھی جو 18 ویں صدی میں انگریزوں کے خلاف ہوئی تھی۔ اس فلم میں وندے ماترم گیت کا بھی استعمال کیا گیا تھا۔
حقیقت: فلم حقیقت 1962 میںہندوستان اور چین کے درمیان جنگ پرمبنی تھی۔ فلم کی کہانی ایسے فوجیوں کی ٹکڑی کی ہے جو لداخ میں ہندوستان اور چین کی جنگ کے دوران سوچتے ہیں کہ ان کی موت یقینی ہے لیکن انھیںکیپٹن بہادر سنگھ (دھرمندر) بچالیتا ہے۔ بہت شاندار فلم تھی۔اس فلم کا نغمہ’ اب تمہارے حوالے وطن ساتھیو۔۔۔‘ کو لوگ آج بھی دلچسپی کے ساتھ سنتے ہیں۔

 

 

 

شہید بھگت سنگھ: یہ فلم بھگت سنگھ کی زندگی پر مبنی تھی، جنھوںنے ملک کی آزادی کے لیے اپنی جان قربان کردی تھی۔ منوج کمار کی فلم شہید بھگت سنگھ، جو کہ1965 میں آئی تھی، سپرہٹ رہی تھی۔ بعد میںشہید بھگت سنگھ پر کئی فلمیںبنیں۔ ان میںاگر سب سے زیادہ نام کمایاتو وہ اجے دیوگن کی فلم تھی، جسے راجکمار سنتوشی نے بنایا تھا۔
اُپکار: بتایا جاتا ہے کہ منوج کمار نے یہ فلم سابق وزیر اعظم لال بہادر شاستری کے کہنے پر بنائی تھی۔ دیش بھکتی کی اس فلم کو بنانے کا مقصد یہ تھا کہ ’جے جوان ، جے کسان‘ کے نعرے کو بلند کیا جائے۔ فلم میںمنوج کمار کا نام بھرت تھا اور اس کے بعد لوگ انھیںبھرت کمار ہی کہنے لگے تھے۔ اس فلم کے مشہور نغمہ ’میرے دیش کی دھرتی سونا اگلے۔۔۔‘نے اس زمانے میںکئی ایوارڈ حاصل کیے تھے۔
کرما:یہ 1986 میںبنی ملٹی اسٹار فلم تھی، جس میں دلیپ کمارکے علاوہ نوتن، انل کپور، جیکی شراف اور انوپم کھیر نے اداکاری کے جوہر دکھائے۔ فلم میںیہ دکھایا گیا تھا کہ کس طرح سے ملک میں دہشت گردی کا سایہ بڑھتا جارہا ہے۔اس دہشت گردی کو ختم کرنے کے لیے دلیپ کمار اور ان کے ساتھی دہشت گردوںکا صفایا کرتے ہیں۔ فلم میںایک مشہور نغمہ ’کرم اپنا کریںگے۔۔۔‘ ہندوستانیوں کے کانوں میں آج بھی گونجتا ہے۔
ترنگا: 1992 میں راجکمار کی سپرہٹ فلم ترنگا کو لوگوںنے خوب پسند کیا۔ فلم میںراجکمار کا کردار بریگیڈیر سوریہ دیو سنگھ کا تھا اور ان کا ساتھ نانا پاٹیکر نینبھایا تھا۔ فلم کی سب سے بڑی خاصیت راجکمار کے ڈائیلاگ تھے جیسے ’ہماری زبان بھی ہماری گولی کی طرح ہے، دشمن سے سیدھی بات کرتی ہے‘ اور’ ہم آنکھوںسے سرمہ نہیںچراتے ، ہم آنکھیں ہی چرالیتے ہیں۔‘
بارڈر: جے پی دتّا کی فلم بارڈر 1971 میں ہوئی ہندوپاک کی جنگ پر مبنی ہے۔ فلم میں وہ سب کچھ دیکھنے کو ملے گا جوایک دیش بھکتی کی فلم میں ملنا چاہیے۔ اس فلم میں ہندوپاک جنگ کے وقت لڑی گئی لونگے والا جنگ کو تفصیل کے ساتھ سمجھایا گیا ہے۔ فلم کی کہانی 1971 میں ہوئی انڈوپاک کی لڑائی پر مبنی ہے جہاں راجستھان کی لونگے والا پوسٹ پر 120 ہندوستانی جوان ساری رات پاکستانی ٹینک رجمنٹ کا سامنا کرتے ہیں۔ فلم میںسنی دیول ، سنیل شیٹی، اکشے کھنہ، جیکی شراف وغیرہ کی جاندار اداکاری تھی۔
لکشے: یہ فلم ایسے لاپرواہ نوجوان کرن شیرگل (رتک روشن) کی کہانی ہے جس کی زندگی آرمی میں آنے کے بعد پوری طرح سے بدل جاتی ہے۔ فلم میں دکھایا گیا ہے کہ کس طرح سے ایک لاپرواہ لڑکا آرمی میں آنے کے بعد ملک کی خدمت جی جان سے کرتا ہے۔ اس فلم نے کئی نوجوانوں کو آرمی سے جڑنے کی ترغیب دی ہے۔
ان فلموں کے علاوہ بھی کئی ایسی فلمیںہیںجو دیش بھکتی پر مبنی ہیں۔ جن میںللکار، منگل پانڈے، دی رائزنگ، کرانتی، چٹگانا، کرانتی ویر،سودیش، انڈین، زمین، ایل او سی، کارگل، ماں تجھے سلام، ہالی ڈے،رنگ دے بسنتی،بے بی وغیرہ ایسی فلمیںہیں، جن میںدیش بھکتی (حب الوطنی ) کا جذبہ دکھائی دیتا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *