عید الاضحی کے موقع پر پولیس کو چوکنا رہنا ہوگا

عید الاضحی کے موقع پر شر پسند عناصر قربانی کے جانوروں کو لے کر ہنگامہ کرسکتے ہیں۔ بلکہ یہ خبریں ابھی سے آنی شروع ہوگئی ہیں کہ کچھ لوگ قربانی کے جانوروں کو روکتے ہیں اور انہیں لوٹ کر لے جاتے ہیں۔ ظاہر ہے شر پسند عناصر شر انگیزی تو کریں گے ہی ۔ایسے میں پولیس کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان عناصر پر لگام کرنے کے لئے کارروائی کرے ساتھ ہی مسلمانوں کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ گایوں کی قربانی نہ کرکے دیگر جانوروں کی قربانی کریں کیونکہ گایوں کی قربانی نہ صرف براردان وطن کو تکلیف پہنچاتی ہے بلکہ قانونی اعتبار سے بھی غلط ہے ۔

 

 

حالانکہ کچھ پولیس افسران نے اس سلسلے میں اقدامات کرنے شروع کردیئے ہیں مگر اس طرح کا قدم تمام پولیس افسروں کو عید الاضحی کے آنے سے پہلے اٹھا لینا چاہئے۔ اس سلسلے میں حیدر آباد کے پولیس کمشنر مہیندر ریڈی کی مثال پیش کی جاسکتی ہے جنہوں نے پہلے سے ہی چابکدستی کا مظاہرہ کرتے ہوئے قربانی کے جانوروں کی راہ میں ہونے والی رکاوٹوں کو دور کرنے کے تمام بندوبست کرلئے ہیں۔
عیدالاضحی کے پیش نظر کمشنر پولیس حیدرآباد مسٹر مہیندر ریڈی نے علماء اور مذہبی رہنماؤں کا ایک اجلاس منعقد کیا جس میں عید کے موقع پر کی جانے والی تیاریوں سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ کمشنر پولیس نے یہ یقین دلایا ہے کہ عیدالاضحی کے موقع پر جانوروں کی منتقلی کو بلارکاوٹ یقینی بنانے کی کوشش کی جائے گی۔
اس اجلاس کے دوران پولیس عہدیداروں اور مذہبی رہنماؤں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ عیدالاضحی کے موقع پر گائے کی قربانی نہیں دی جائے گی اور شہر میں پرامن ماحول میں عید منانے کیلئے مکمل تعاون کیا جائے گا۔ صدر جماعت القریش و صدرنشین ریاستی وقف بورڈ الحاج محمد سلیم نے اجلاس کے دوران کہا کہ شہر کے عوام جانوروں کی قربانی کے متعلق قانون کی پابندی کریں گے لیکن انہوں نے پولیسسے مطالبہ کیا کہ بڑے جانوروں کی منتقلی میں خلل پیدا کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے اور آنے والی رکاوٹوں کا خاص خیال رکھیں۔
مہیندر ریڈی نے خطاب میں بتایا کہ پولیس جی ایچ ایم سی عہدیداروں کی مدد سے عید کو پرامن بنانے پر اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں جس کیلئے جانوروں کے فضلے کی فی الفور نکاسی کیلئے گھر گھر خصوصی پیاکیٹس تقسیم کئے جائیں گے اور پولیس عہدیدار حالات پر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہیں

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *