اردو ’دی وائر‘ کا حامد انصاری نے افتتاح کیا

71 ویں یوم آزادی کے موقع پر سابق نائب صدر اور راجیہ سبھا کے چیئرمین محمد حامد انصاری کے ذریعہ کانسٹی ٹیوشن کلب میں معروف صحافی سدھارتھ ورد راجن اور ونود دوا کی سرپرستی میںچل رہے نیو زپورٹل’دی وائر‘ ل کے اردو ورژن کے افتتاح سے اردو میڈیا میںاس کی آمد کو اردو حلقہ میں خوش آئند بتایا جارہا ہے۔ اردو ورژن کی ٹیم میںمعروف کالم نویس مہتاب عالم شامل ہیں۔ اردو دی وائر کی آمددراصل عام لوگوںمیںاردو کی اہمیت و ضرورت کا اعتراف ہے۔ عیاں رہے کہ اردو میںجن اخبارات و رسائل کے ورژن یا ایڈیشن نکل رہے ہیں، ان میں’چوتھی دنیا‘ کے علاوہ سہاراگروپ کا اردو راشٹریہ سہارا، جاگرن گروپ کا انقلاب، اردو ای ٹی وی،زی نیوزگروپ کا زی سلام قابل ذکر ہیں۔
اردو دی وائر کے افتتاح کے موقع پر محمد انصاری نے اردو کے تعلق سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اردو بنیادی طور پر ہندوستانی زبان ہے اور وہ اس کے مستقبل کے تئیںپرامید ہیں جبکہ پورٹل کے بانی سدھارتھ ورد راجن نے کہا کہ ہم ایک اہم تجربہ کے دور سے گرزررہے ہیں اور ہم اسے اقتدار کے گلیاروں کے اثر و رسوخ اور دباؤ سے مبرا کارپوریٹ ذہنیت کا قلع قمع کرنے نیز آزادانہ و منصفانہ صحافت کی بنیاد ڈالنے کے لیے لے کر آئے ہیں۔ اس موقع پر دی وائر کے مشاورتی مدیر ونود دوا سے اظہار خیال کرتے ہوئے حامد انصاری نے کہاکہ جدو جہد آزادی کے دوران اردو نے نمایاںکردار ادا کیا ہے۔ برطانوی حکومت اردو کی نظموں اور غزلوں پر گہری نگاہ رکھتی تھی کیونکہ ان نظموں نے آزادی کی شمع روشن کرر کھی تھی اور ان کے گہرے اثرات مجاہدین آزادی پر پڑتے تھے۔ یہ انقلابی زبان ہے جس نے ملک کو آزادی سے ہمکنار کرنے میںاہم ترین کردار ادا کیا ہے اور یہ زبان آج بھی ملک کی تعمیر نو میںاتنی ہی موزوں ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *