گئو رکشک نے کی گایوں پر بربریت

ملک میں گئو رکشا کے نام پر گئو رکشک ہی گایوں کے ساتھ مظالم کررہے ہیں۔انہیں بھوکی رکھنا ،بیمار ہونے پر دوا نہ دینا ان گئو رکشکوں نے اپنی عادت بنالی ہے ۔بتایا جاتا ہے کہ ضلع درگ کے راجپور گاؤں میں بی جے پی کی نگرانی میں چلائے جارہے گاؤ شالہ کے اندر پچھلے تین دنوں میں دو سو کے قرب گائیوں کی موت واقع ہوئی ہے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گائیوں کی اموات کی تعداد 200ہے اور ان میں سے زیادہ تر مردہ گائیوں کو گاؤ شالہ کے قریب ہی دفن کردیاگیا ہے۔یہ موتیںکہ کھانے او ردوائیوں کی کمی کے سبب ہوئی ہیں۔تاہم ذمہ داروں نے کھانے کی کمی کی وجہ سے 27گائیوں کی موت کی توثیق کی ہے۔

 

 

پچھلے سات سالوں سے مذکورہ گاؤ شالہ بی جے پی لیٹر اور جامول نگر نگم کے صدر ہریش ورما چلارہے ہیں۔راجپور سرپنچ کے شوہر سیوا رام ساہو کا کہنا ہے کہ’’ دودن قبل ہم نے دیکھا کہ گاؤ شالہ کے قریب جے سی بی مشین کام کررہی ہیں اور ہم نے کچھ میڈیا والوں کو بھی اس کی خبر دی۔ جب ہم یہاں پہنچے تو دیکھا کہ کئی گڑھے بنے ہوئے ہیں جو مردہ گائیوں کو دفن کرنے کے لئے تیار کئے گئے تھے۔ ان کی تعداد 200کے قریب ہے‘‘۔بہر کیف یہ تعداد چاہے دو سو ہو یا نہیں لیکن یہ بات تو صاف ہے کہ گئو رکشا کا نعرہ دینے والے خود ہی گئو کے ساتھ بربریت کررہے ہیں۔
موقع پر موجود ڈاکٹرس کے مطابق گائیوں کی موت ’’ کھانے اور دوائیو ں کی کمی ‘‘ کے سبب ہوئی ہے۔ تاہم بی جے پی لیڈر ہریش ورما نے دودن قبل دیوار کے گرنے سے گائیوں کی موت ہونے کا دعوی کررہے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ کھانے یا دوائوں کی کوئی کمی نہیں ہوئی ہے ،دیوار گرنے کے حادثے میں یہ موت ہوئی ہے۔اب حقیقت کیا ہے اس کا خلاصہ تحقیق کے بعد ہی ہوگا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *