بریلوی مسلک کے مدرسوں کے نصاب میں طلاق شامل

ایک نشست میںتین طلاق کو غیر آئینی قرار دینے کے سپریم کورٹ کے 22 اگست 2017 کے اکثریتی فیصلے کے پیش نظر بریلوی مسلک کے سب سے بڑے مرکز درگاہ اعلیٰ حضرت نے اپنے مسلک کے مدرسوں کے کورس میں طلاق کا مضمون شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ درگاہ اعلیٰ حضرت کے دارالافتاء منظر اسلام کے صدر مفتی سیدکفیل ہاشمی کا کہنا ہے کہ طلاق کو لے کر شریعت میںکئی طرح کی شرطیں ہیںلیکن طلاق کے زیادہ تر معاملوںمیںان شرائط کو نظرانداز کردیا جاتا ہے۔ طلاق کے بارے میںلوگوںکو صحیح جانکاری نہ ہونا بھی گڑبڑی کی بڑی وجہ بنتی ہے۔ انھوںنے کہاکہ اس سلسلے میںجلد ہی درگاہ اعلیٰ حضرت کی طرف سے ملک بھر کے بریلوی مدرسوں کے لیے ہدایت نامہ جاری کیا جائے گا۔ نیز اس تعلق سے ہیلپ لائن بھی شروع ہوگی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *